.

اسٹوڈیو میں آگ کا الارم ، برطانوی نیوز اینکر کا سُکون دیکھنے کے قابل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بدھ کی شب برطانوی ٹی وی چینل ITV کے اسٹوڈیو میں اچانک فائر الارم گونج اٹھا جو اس جانب اشارہ تھا کہ اسٹوڈیو کو فوری طور پر خالی کیا جائے۔ تاہم اس ہنگامی حالت میں بھی چینل کی اسکرین پر دس بجے کا بلیٹن پیش کرنے والے نیوز اینکر Tom Bradby نے اپنے اعصاب کو مکمل طور پر قابو میں رکھا۔ موصوف نے ٹی وی کی دنیا کی ایک مشہور برطانوی شخصیت ہونے کی حیثیت سے فوری طور پر اپنی نشست چھوڑ کر بھاگ جانے کے بجائے ناظرین کو پورے اطمینان اور سکون سے اسٹوڈیو میں آگ لگنے سے خبردار کرنے والے الارم کی آواز کے بارے میں آگاہ کیا اور ان سے نشریات کا سلسلہ منقطع کرنے پر معذرت پیش کی۔

بلیٹن کے دوران جس وقت فائر الارم بجنا شروع ہوا تو اُس وقت ایران میں عوامی احتجاجی تحریک کے حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے موقف سے متعلق خبر پڑھی جا رہی تھی۔

ٹوم نے الارم بجنے پر تھوڑا سے توقّف کیا اور پھر کہا کہ "ہم ابھی تک آگ کے حوالے سے انتباہی الارم سن رہے ہیں۔ ہم یقین سے نہیں کہہ سکتے کہ ایسی صورت میں ہمیں کیا کرنا چاہیے۔ ہم معذرت چاہتے ہیں کہ ہمیں عمارت کو خالی کرنا ہو گا۔ ایسے واقعات پیش آ جاتے ہیں اور ہمارے پاس اس حوالے سے زیادہ آپشن نہیں ہوتے۔ میں واقعتا معذرت چاہتا ہوں۔ اگر ممکن ہوا تو ہم آپ کی خدمت میں بقیہ پروگرام کے ساتھ دوبارہ حاضر ہوں گے۔ شب بخیر"۔

مذکورہ بلیٹن دیکھنے والے افراد کی ایک بڑی تعداد نے سوشل میڈیا پر نیوز اینکر کے ٹھنڈے اعصاب پر شدید حیرت کا اظہار کیا ہے۔

ایک صارف نے اپنی ٹوئیٹ میں کہا کہ "مذکورہ اینکر نے آگ سے متعلق طویل ترین اور پرسکون ترین تنبیہہ کا انعام حاصل کیا ہے"۔

ایک دوسری ٹوئیٹ میں بتایا گیا ہے کہ نیوز اینکر ٹوم نے ناظرین کو الوداع کہنے اور کوچ کرنے میں 40 سیکنڈ کا وقت لے لیا جب کہ عمارت میں آگ لگ چکی تھی۔