.

چین کے پانیوں میں آئیل ٹینکر کو جہاز سے تصادم کے بعد آگ گئی ، 30 ایرانی لاپتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چین کی مشرقی ساحلی حدود میں ایک آئیل ٹینکر کو مال بردار جہاز سے ٹکرانے سے آگ لگ گئی ہے جس کے بعد بتیس افراد لا پتا ہو گئے ہیں۔ان میں زیادہ تعداد ایرانیوں کی ہے۔

چین کی ٹرانسپورٹ کی وزارت نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ٹینکر پر 136000 ٹن تکثیفی تیل لدا ہوا تھا اور یہ ہفتے کی شب ایک مال بردار جہاز سے ٹکرا گیا تھا جس کے بعد اس کو آگ لگ گئی۔اس کے عملہ کے تیس ایرانی اور دو بنگلہ دیشی ارکان حادثے کے بعد سے لاپتا ہے۔

بیان کے مطابق دوسرے جہاز کو بھی حادثے میں نقصان پہنچا ہے لیکن اس سے جہاز کی سلامتی کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہوا ہے اور اس کے عملہ کے تمام اکیس چینی ارکان کو بہ حفاظت نکال لیا گیا ہے۔

اس آئیل ٹینکر کو اتوار کو بھی آگ لگی ہوئی تھی اور وہ آگ کے شعلوں اور سیاہ دھویں کے مرغولوں میں لپٹا ہوا تھا ۔ ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن نے اس کی فوٹیج بھی نشر کی ہے۔

حادثے کا شکار ہونے والا ٹینکر پانا ما کا پرچم بردار ’’ ہے۔سانچی‘‘ نامی اس ٹینکر کو ایران کی گلوری شپنگ کمپنی چلاتی ہے۔یہ ٹینکر جنوبی کوریا کی جانب جارہا تھا۔اس کو شنگھائی کے مشرق میں قریباً 160 ناٹیکل میل دور پانیوں میں حادثہ پیش آیا ہے۔

یہ ایرانی ٹینکر ہانگ کانگ کے پرچم بردار مال بردار جہاز سے ٹکرایا تھا اور اس پر 64 ہزار ٹن غذائی اجناس لدی ہوئی تھیں۔ چین کے میری ٹائم حکام نے تلاش اور امدادی سرگرمیوں کے لیے آٹھ بحری جہاز روانہ کردیے تھے اور جنوبی کوریا نے ایک طیارہ اور ساحلی محافظوں کا ایک جہاز امدادی سرگرمیوں کے لیے بھیجا ہے۔