.

داعش کے جرمن’ موسیقار‘ کمانڈر کی ہلاکت کی اطلاعات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی سے تعلق رکھنےوالے ایک مشہور داعشی کمانڈر ابو طلحہ جرمنی کی شام میں ایک فضائی حملے میں ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

خبر رساں اداروں کے مطابق جرمنی کے سابق موسیقار ڈینیس کوسبیرٹ اسلام قبول کرنے کے بعد داعش میں شامل ہو گیا تھا۔ امریکی وفاقی تحقیقاتی ادارے ’ایف بی آئی‘ نے اس کی تلاش کے لیے ایک خاتون کو جاسوسی پر مامور کیا تھا۔ اس جاسوسہ نے ایف بی آئی کی خاتون مترجم کے ساتھ شادی بھی کی تھی۔

انتہا پسند گروپوں پر نظر رکھنے والی ویب سائیٹ ’سائیٹ‘ نے بتایا ہے کہ امریکا کو مطلوب ابو طلحہ جرمنی حال ہی میں شام میں ایک فضائی حملے کے نتیجے میں مارا گیا۔

خیال رہے کہ ڈینیس کئی سال تک جرمنی میں موسیقار کے طورپر مشہور ہوا۔ جرمنی میں اسے ’ڈیسو ڈوگ‘ کے نام سے بھی جانا جاتا تھا۔

داعش میں شمولیت کے بعد اسے متعدد پروپیگنڈہ ویڈیوز میں دیکھا گیا جہاں بہ ظاہر اس کے ہاتھ میں مقتول افراد کے تن سے جدا کیے گئے سر دیکھے جا سکتے تھے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق گنی نژاد جرمن داعشی کوسبیرٹ کو شمال مغربی شام کی دیر الزور گورنری کے گرانیج کے علاقے میں فضائی حملے کا نشانہ بنایا گیا۔

’سائیٹ‘ پر مبینہ طورپر جرمن داعشی کمانڈر کی 8 تصاویر جاری کی گی ہیں، ان تصاویر میں اسے خون میں لت پت دیکھا جاسکتا ہے۔

امریکی وزارت دفاع نے اکتوبر2015ء کو ایک بیان میں دعویٰ کیا تھا کہ کوسبیرٹ کو ایک فضائی حملے میں قتل کردیا گیا ہے۔ تاہم بعد ازاں امریکیوں نےاعتراف کیا تھا کہ کوسبیرٹ حملے میں بچ گیا گیا۔

قبل ازیں شدت پسند گروپوں نے اپریل 2014ء کو کوسبیرٹ کی ہلاکت کا دعویٰ کیا تھا تاہم بعد ازاں انہوں نے بھی بیان واپس لیے لیا تھا۔