.

برطانیہ میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا خیرمقدم کیا جانا چاہیے : بورس جانسن

مجوزہ دورے کے التوا سے برطانیہ کی امریکا سے غیر معمولی اقتصادی شراکت داری کو نقصان پہنچے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی وزیر خارجہ بورس جانسن نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ملک میں خیر مقدم کیا جانا چاہیے ۔انھوں نے خبردار کیا ہے کہ اس دورے کی مزاحمت سے برطانیہ کے قومی مفادات کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

انھوں نے اتوار کو اخبار ’’دا سنڈے ٹیلی گراف‘‘ میں ایک مضمون میں لکھا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے مجوزہ دورے کے التوا سے برطانیہ کی امریکا سے غیر معمولی اقتصادی شراکت داری کو نقصان پہنچے گا۔

انھوں نے لکھا:’’ ڈونلڈ ٹرمپ دنیا کی عظیم اور سب سے طاقتور جمہوریت کے منتخب صدر ہیں اور یہ ملک ہمارا سب سے قریبی اتحادی ہے‘‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’’صدر ٹرمپ کے دورے کے ناقدین برطانیہ کے اقتصادی مفادات کے بارے میں کچھ نہیں جانتے ہیں۔ وہ امریکی صدر کے دورے کی مخالفت کرکے دراصل ہمارے قومی مفادات کو نقصان پہنچا رہے ہیں‘‘۔

بورس جانسن نے اس دعوے کو بھی مسترد کردیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایک الگ تھلگ امریکا کی صدارت کررہے ہیں۔ان کے بہ قول ٹرمپ انتظامیہ احترام اور تسلیم کیے جانے کی حق دار ہے چہ جائیکہ اس کو بچکانہ تنقید کا نشانہ بنایا جائے۔