.

والد کی حمایت، جنرل سامی عنان کے بیٹے کو کام سے روک دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی میری ٹائم ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے سابق آرمی چیف جنرل سامی عنان کے بیٹے سمیر سامی عنان کو اپنے والد کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے اور حکومت پر تنقید کی پاداش میں کام سے روک دیا گیا ہے۔ ان پر سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ’فیس بک‘ پر بعض نا مناسب آراء پر مبنی پوسٹ شائع کرنے کا الزام ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ اکیڈیمی کے ڈائریکٹر معتز خمیس نے بتایا کہ ادارے چیئرمین ڈاکٹر اسماعیل عبدالغفار اسماعیل فرج نے سمیر سامی عنان سے تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ سمیر سامی عنان ملٹری اکیڈیمی میں عرب امور کے عہدیدار ہیں۔ انہیں اتوار کے روز کام سے روکنے کے بعد تحقیقات کمیٹی کے سامنے پیش کیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ سمیر سامی عنان نے اپنے والد جنرل سامی عنان کو رواں سال ہونے والے صدارتی انتخابات میں حصہ لینے سے روکنے پر سماجی رابطے کی ویب سائیٹ پر کڑی تنقید کی تھی۔

خیال رہے کہ حال ہی میں جنرل سامی عنان نے مسلح افواج سے مشورے کے بغیر صدارتی انتخابات میں حصہ لینےکا اعلان کیا تھا جس کے بعد ان کے خلاف ایکشن لیا گیا اور انہیں نہ صرف انتخابات میں حصہ لینے سے روک دیا گیا بلکہ انہیں حراست میں بھی لیا گیا ہے۔

سمیر سامی عنان نے اپنے والد کے ساتھ یکجہتی کرتے ہوئے مصری حکومت کے طرز عمل پر تنقید کی تھی اور حکومت کا چلن غیر جمہوری قرار دیا تھا۔