.

ہمارے پاس بحری سیکٹر کو نشانہ بنانے والے بیلسٹک میزائل ہیں: ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی پاسداران انقلاب کے نائب کمانڈر جنرل حسین سلامی نے پیر کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ اُن کے ملک کے پاس منفرد نوعیت کے بیلسٹک میزائل ہیں جو خاص طور پر بحری سیکٹر کو نشانہ بنانے میں کام آتے ہیں۔

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کی فورسز کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے انکشاف کیا تھا کہ ایران نے آبنائے باب المندب میں بین الاقوامی جہاز رانی کو نشانہ بنانے کے لیے حوثیوں کو ہتھیار فراہم کیے ہیں۔

ایران کی سرکاری خبر رساں ایجنسی "اِرنا" کے مطابق جنرل سلامی کا کہنا تھا کہ "میں پوری جرات کے ساتھ باور کرا رہا ہوں کہ ہمارے پاس منفرد صلاحیت اور اعلی ٹکنالوجی کے حامل ایسے بیلسٹک میزائل ہیں جو روس اور امریکا کے پاس بھی نہیں۔ ان کی رفتار آواز کی رفتار سے آٹھ گنا زیادہ ہے اور یہ اپنے ہدف کو سو فی صد درست نشانہ بناتے ہیں"۔

پاسداران انقلاب کے مذکورہ عہدے دار کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب ایران کو اپنے میزائل اور جوہری دونوں متنازع پروگراموں اور خطے اور دنیا بھر میں دہشت گردی کی سپورٹ اور فنڈنگ کے سبب امریکی دھمکیوں اور بین الاقوامی دباؤ کا سامنا ہے۔