.

شمالی شام میں کرد ملیشیا نے ترک فوج کا ایک ہیلی کاپٹر مار گرایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمالی علاقے میں کرد جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کے دوران میں ترک فوج کا ایک ہیلی کاپٹر مارگرایا گیا ہے۔

ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے ہفتے کے روز استنبول میں ایک تقریب میں گفتگو کرتے ہوئے اس ہیلی کاپٹر کے تباہ ہونے کی اطلاع دی ہے لیکن انھوں نے یہ نہیں بتایا ہے کہ اس کو شامی کرد ملیشیا پیپلز پروٹیکشن یونٹس ( وائی پی جی ) نے مار گرایا ہے ۔البتہ انھوں نے کہا ہے کہ اس کی تباہی کے ذمے داروں کو قیمت چکانا پڑے گی۔

ترک فوج نے فوری طور پر اس ہیلی کاپٹر کی تباہی کے حوالے سے کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے جبکہ کرد ملیشیا کے ایک ترجمان مصطفیٰ بالی نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ ان کے جنگجوؤں نے عفرین کے شمال مغرب میں واقع علاقے راجو میں اس ہیلی کاپٹر کو مار گرایا ہے۔

واضح رہے کہ ترک فوج 20 جنوری سے عفرین میں کرد ملیشیا کے خلاف کارروائی کررہی ہے اور اس میں لڑاکا ہیلی کاپٹر بھی استعمال کیے جارہے ہیں۔ترکی وائی پی جی کو ایک دہشت گر گروپ قرار دیتا ہے اور اس کا کہنا ہے کہ یہ کرد گروپ ترکی کے جنوب مشرقی علاقوں میں مسلح بغاوت کرنے والے گروپ کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کا اتحادی ہے اور دراصل یہ دونوں تنظیمیں ایک ہی ہیں۔شامی علاقے میں اس نئی کارروائی کے آغاز کے بعد سے 19 ترک فوجی مارے جاچکے ہیں۔