.

سعودی عرب مارچ میں پہلے عرب فیشن ویک کی میزبانی کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب مارچ میں ہونے والے عرب فیش ویک کی پہلی مرتبہ میزبانی کرے گا۔دبئی میں قائم عرب فیشن کونسل کی ویب سائٹ کے مطابق یہ فیشن ویک سعودی دارالحکومت الریاض میں 26 سے 31 مارچ تک ایپکس سنٹر میں منعقد ہوگا۔

عرب فیشن کونسل نے دسمبر میں الریاض میں اپنا ایک علاقائی دفتر کھولنے کا اعلان کیا تھا اور سعودی شہزادی نورا بنت فیصل آل سعود کو اس کا ا عزازی صدر نامزد کیا تھا۔

شہزادی نورا نے کونسل کی ویب سائٹ پر جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ الریاض میں پہلا عرب فیشن ہفتہ ایک بین الاقوامی ایونٹ سے بڑھ کر ہوگا ۔ہمیں امید ہے کہ اس سے سیاحت ، مہمان نوازی ، ٹریول اور تجارت سمیت دوسرے اقتصادی شعبوں میں بھی بہتری آئے گی۔

فرانسیسی دارالحکومت پیرس اور اٹلی کے شہر میلان میں منعقد ہونے والے بین الاقوامی فیشن ہفتے کی طرح عرب فیشن ویک بھی سال میں دو مرتبہ منعقد ہوتا ہے۔اس کے دوران میں شائقین اور گاہک ’’ اب دیکھیں ،اب خریدیں ‘‘ کے اصول کے تحت ملبوسات خرید کرسکتے ہیں۔

ماضی میں عرب فیشن ویک صرف دبئی ہی میں منعقد ہوتے رہے ہیں اور ان میں مارچیسا اور ٹونی وارڈ بھی شرکت کرچکی ہیں۔دبئی 9 مئی سے 12 مئی تک اپنا متوازی عرب فیشن ویک منعقد کرے گا اور یہ اس کا چھٹا ایڈیشن ہوگا۔

موجودہ سعودی حکومت نے خواتین کو قومی دھارے میں لانے کے لیے متعدد اقدامات کیے ہیں اور انھیں اس سال جون سے ڈرائیونگ کی بھی اجازت دے دی ہے ۔ گذشتہ ہفتے ہی سعودی عرب کے سینیر عالم اور علماء کونسل کے ایک رکن شیخ عبداللہ المطلق نہیں کہا تھا کہ ’’ سعودی خواتین کو عبایا ( مکمل حجاب ) اوڑھنے پر مجبور نہیں کیا جانا چاہیے‘‘۔