.

حسن نصر اللہ پگڑی کے بغیر قاسم سلیمانی کے ساتھ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نواز لبنانی ملیشیا حزب اللہ کے سکریٹری جنرل حسن نصر اللہ کی ایرانی پاسداران انقلاب کی القدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی کے ساتھ ایک تصویر منظر عام پر آئی ہے۔ تصویر کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں حسن نصر اللہ اپنے سر پر عموما موجود رہنے والی پگڑی کے بغیر نظر آ رہا ہے۔

لبنانی نجی سیٹلائٹ چینل LBC نے اتوار کے روز بتایا کہ تصویر میں ظاہر ہونے والی ملاقات کی تاریخ اور مقام کے بارے میں جان کاری حاصل نہیں ہو سکی۔ تصویر اتوار کو رات گئے سوشل میڈیا پر گردش میں آئی۔

ٹوئیٹر پر ایک ایرانی صارف مہرداد خلیلی نے تصویر کے بارے میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ نصر اللہ کا پگڑی کے بغیر ہونا یہ ظاہر کرتا ہے کہ اس ملاقات میں وہ قاسم سلیمانی کا میزبان تھا۔ البتہ مذکورہ صارف نے ملاقات کا مقام متعیّن نہیں کیا۔

یہ تصویر اُن حالیہ رپورٹوں کے بعد سامنے آئی ہے جن میں کہا گیا ہے کہ ایران دمشق کے نزدیک اپنا ایک اڈہ تعمیر کر رہا ہے۔ اس کام کی نگرانی القدس فورس کر رہی ہے جس کا سربراہ قاسم سلیمانی ہے۔

مغربی میڈیا نے گزشتہ ہفتے سیٹلائٹ سے لی گئی تصاویر نشر کی تھیں۔ ان تصاویر کے بارے میں بتایا گیا کہ یہ دمشق کے شمال مغرب میں واقع ایرانی فوجی اڈے کی ہیں۔

لبنانی ملیشیا حزب اللہ کو شامی اپوزیشن کے گروپوں کے خلاف لڑائی اور شامی فوج کے اکثر معرکوں میں بشار الاسد کی حکومت کا بنیادی شراکت دار شمار کیا جاتا ہے۔

ایرانی پاسداران انقلاب، حزب اللہ ملیشیا اور ایران کی طرف سے بھیجی گئی فرقہ وارانہ ملیشیاؤں نے اُن علاقوں کو آپس میں تقسیم کر رکھا ہے جہاں بشار کی فوج معرکہ آرائی میں مصروف ہے۔

واضح رہے کہ شامی اپوزیشن کا مطالبہ ہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب ، حزب اللہ اور ایران کی حمایت یافتہ غیر ملکی ملیشیاؤں کا شام سے فوری انخلاء عمل میں آئے۔ اپوزیشن کے نزدیک ایرانی فورسز کے انخلاء اور شامیوں کے خون بہنے کا سلسلہ روکے جانے سے قبل شام میں کوئی حل سامنے نہیں آ سکتا۔