.

فرانسیسی وزیر خارجہ کی شام میں جنگ بندی پر بات چیت کے لیے تہران آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی ایسنا نے اطلاع دی ہے کہ فرانسیسی وزیر خارجہ ژاں وائی ویس لی دریان سرکاری دورے پر تہران پہنچے گئے ہیں۔وہ ایرانی صدر حسن روحانی اور وزیرخارجہ جواد ظریف سے دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات ، شام کی صورت حال اور ایران کے بیلسٹک میزائلوں کے پروگرام کے بارے میں بات چیت کریں گے۔

لی دریان کے دفتر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان کے اس دورے کا اہم مقصد شام میں جاری جنگ میں عارضی وقفے کے لیے ایرانی قیادت سے بات چیت کرنا ہے اور وہ ایرانی قیادت پر زور دیں گے کہ وہ شامی صدر بشارالاسد پر جنگ بندی سے اتفاق کے لیے اپنا اثرورسوخ استعمال کریں۔

ان کے اس دورے سے قبل فرانس نے ایران کے بیلسٹک میزائلوں کے پروگرام پر کڑی نکتہ چینی کی ہے۔ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے درمیان جولائی 2015ء میں طے شدہ جوہری معاہدے کے بعد کسی اعلیٰ فرانسیسی عہدے دار کا اس ملک کا یہ تیسرا دورہ ہے۔فرانس اس جوہرے معاہدے کے بعد سے ایران کے جوہری پروگرام کو تنقید کا نشانہ بناتا چلا آ رہا ہے۔

لی دریان تہران میں واقع ایران کے قومی عجائب گھر میں ’’ تہران میں لوفرے‘‘ کے نام سے منعقد ہونے والی ایک نمائش کا بھی افتتاح کریں گے۔