شمالی کوریا مشروط طور پر جوہری ہتھیاروں سے دست بردار ہونے کو تیار ہے : جنوبی کوریا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

جنوبی کوریا کا کہنا ہے کہ اس کا اپنے پڑوسی ملک شمالی کوریا کے ساتھ آئندہ ماہ اپریل کے اواخر میں بات چیت کے انعقاد پر اتفاق رائے ہو گیا ہے۔

جنوبی کوریا کے صدر مون جئی اِن کے دفتر نے منگل کے روز بتایا ہے کہ دونوں ممالک دونوں سربراہان کے بیچ "ہاٹ لائن" قائم کرنے پر متفق ہو گئے ہیں۔

جنوبی کوریا کی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ چونگ یوئی یونگ نے بتایا ہے کہ شمالی کوریا نے اس بات کی وضاحت کی ہے کہ اگر اس کے خلاف فوجی کارروائی کی دھمکیاں ختم کر دی جائیں اور قابل اعتبار سکیورٹی ضمانتیں حاصل ہو جائیں تو اسے اپنے جوہری ہتھیار باقی رکھنے کی کوئی ضرورت نہیں۔

یہ پیش رفت چونگ یوئی یونگ کی قیادت میں جنوبی کوریا کے ایک وفد کی شمالی کوریا سے سیؤل واپسی کے بعد سامنے آئی ہے۔ اس وفد نے شمالی کوریا کے سربراہ کِم جونگ اُن سے ملاقات کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں