ریاض: دھماکوں کی منصوبہ بندی، سعودی داعشی کو 20 سال قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ریاض میں فوجداری عدالت نے جمعرات کے روز ایک سعودی شہری کو 20 سال قید کی سزا سنائی ہے۔ اس شہری پر داعش تنظیم کے ساتھ تعلق اور دھماکوں کی منصوبہ بندی کا الزام تھا۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ملزم نے مشرقی صوبے میں تیل کی تنصیبات کو دھماکوں سے اڑانے کےلیے ایک دہشت گرد سیل بنانے کی کوشش کی۔

فیصلے کے مطابق قصور وار ٹھہرائے گئے سعودی شہری نے دارالحکومت ریاض میں ہنگامی فورسز کے صدر دفتر کو دھماکوں کا نشانہ بنانے کی بھی کوشش کی۔ اس نے دہشت گرد سیل میں اپنے ساتھ کام کرنے کے لیے ایک خاتون کو بھرتی کرنے کی کوشش کی۔ اس کے علاوہ یوٹیوب پر داعش تنظیم کی حمایت پر مشتمل وڈیو کلپس پوسٹ کیے۔ ٹوئیٹر پر ایسے اشتعال انگیز پیغامات پوسٹ کیے جن میں حکمرانوں کے خلاف قتال کے لیے نکلنے کا مطالبہ کیا گیا اور سکیورٹی فورسز کے اہل کاروں کو قتل کرنے پر اکسایا گیا تھا۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ملزم کے جیل سے باہر آنے کے بعد 20 سال کی مدت تک اس کے سوشل میڈیا اور انٹرنیٹ پر کسی بھی شکل میں شریک ہونے اور ملک سے باہر جانے پر پابندی ہو گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں