کینیڈا : شاہی گُھڑ سوار پولیس کی قیادت پہلی مرتبہ خاتون کے حوالے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے جمعے کے روز پہلی مرتبہ ملک کی شاہی گھڑ سوار پولیس کے قائد کے منصب پر ایک خاتون کا تقرر کیا ہے۔ واضح رہے کہ مذکورہ خاتون نے گزشتہ برسوں کے دوران جنسی حملوں اور امتیازی سلوک سے متعلق الزامات کے حوالے سے کافی نام کمایا ہے۔

کینیڈا کے صوبے ساسکچیوان کے شہر ریجینا میں پولیس اکیڈمی میں منعقد تقریب کے دوران ٹروڈو کا کہنا تھا کہ پولیس کے شعبے میں 31 برس سے فرائض انجام دینے والی خاتون افسر برینڈا لوکی اپریل میں پولیس سربراہ کا منصب سنبھالیں گی۔

سابق سربراہ پوپ پاولسن اپنے منصب پر پانچ برس سے زیادہ فائز رہنے کے بعد گزشتہ برس جون میں ریٹائرڈ ہو گئے تھے۔ پاولسن نے اپنی مدت کے دوران آبدیدہ ہو کر جنسی ہراسیت اور حملوں اور امتیاز سے متعلق اُن دعوؤں کے حوالے سے معافی مانگی تھی جو ادارے کے لیے انتہائی شرمندگی کا باعث بنے۔

جسٹن ٹروڈو کے مطابق کینیڈا کی شاہی گھڑ سوار پولیس کو شہریوں کی نظروں میں ایک مرتبہ پھر قابل اعتبار بنانے کے لیے بہت کام کرنا ہو گا۔

ادھر برینڈا لوکی کا کہنا ہے کہ وہ اپنے نئے منصب کے حوالے سے درپیش تمام چیلنجوں کا مقابلہ کریں گی۔ کینیڈا میں پولیس کے نصف کے قریب اہل کاروں کی نمائندہ انجمن نیشنل پولیس فیڈریشن نے برینڈا لوکی کے تقرر کا خیر مقدم کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں