امریکی فضائی کمپنی کے کپتان پر ساتھی خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنانے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کی ایک فضائی کمپنی "الاسکا ایئرویز" کی ایک خاتون معاون کپتان نے اپنے ایک ساتھی مرد کپتان کے خلاف نشہ آور چیز دینے اور پھر زیادتی کا نشانہ بنانے کا مقدمہ دائر کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ دوران سفر فضائی کپتان اور اس کی معاون خاتون کے امریکی شہر Minneapolis میں رات گزارنے کے موقع پر پیش آیا۔

متاثرہ 39 سالہ خاتون اس سے قبل افغانستان میں امریکی فوج کے ساتھ عسکری مہم میں فوج ہیلی کاپٹر چلانے کی ذمے داری انجام دے چکی ہیں۔ خاتون کے مطابق ساتھی کپتان نے اس کے مشروب میں کوئی نشہ آور چیز ملا دی تھی جس کے بعد اچانک اس کا سر بھاری محسوس ہوا۔ بعد ازاں وہ ہوش میں آئی تو ساتھی کپتان کے بیڈ روم میں اس کے بستر پر تھی۔

خاتون کے مطابق اس کے ساتھ زیادتی کا یہ واقعہ جون 2017ء میں پیش آیا جب کہ وہ ایک پرواز کے سلسلے میں فرائض انجام دے رہی تھی۔ فضائی کمپنی کے جس کپتان پر الزام عائد کیا گیا ہے وہ شادی شدہ ہے اور اس کی عمر 50 برس ہے۔

خاتون نے دعوی کیا ہے کہ واقعے کے روز جب اسے ہوش آیا تو اس نے ہڑبڑا کر اپنے کپڑے تلاش کیے۔ اس دوران جسمانی علامات سے یقین ہو گیا کہ اسے ساتھی کپتان نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔

خاتون نے فضائی کمپنی سے مطالبہ کیا ہے کہ "زیادتی کے واقعے میں ملوث" ہونے کے بعد اس کپتان کو برطرف کیا جائے۔

دوسری جانب "الاسکا ایئرویز" کی ترجمان این جونسن کا کہنا ہے کہ کمپنی سنجیدگی کے ساتھ واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے جس کے مکمل ہونے تک مذکورہ کپتان کو کام سے روک دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں