"فرق صرف لباس کا ہے" : مراکش کو سحر میں مبتلا کر دینے والی خاتون خاکروب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مراکش میں خواتین خاکروبوں کا مقابلہ حسن جیتنے والی سناء معطاط کا کہنا ہے کہ "ان کے سڑکوں کی صفائی کے پیشے اور دوسرے کسی بھی پیشے میں کوئی فرق نہیں ہے۔ انہوں نے جو پیشہ اختیار کر رکھا ہے وہ استاد یا کسی دوسرے پیشے جیسا ہی ہے۔ اس 'لباس' کے سوا پیشوں میں کوئی فرق نہیں"۔ سناء کا اشارہ صفائی کرنے والے خاکروبوں کی خاص رنگ کی وردی کی جانب تھا۔

العربیہ نیوز چینل کے پروگرام "تفاعلکم" میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سناء نے بتایا کہ انہیں اپنے پیشے میں کوئی مشکل یا مشقت نظر نہیں آتی ہے۔

سناء کے مطابق خاکروب خواتین کا مقابلہ حسن جیتنے کے نتائج کی انہیں بہت زیادہ خوشی ہے اور اب وہ مشہور ہو گئی ہیں۔ لوگ ان سے سڑکوں پر ملتے ہیں تو ساتھ تصاویر بنوانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ سناء نے باور کرایا کہ مشہور ہو جانے کے بعد وہ اپنا پیشہ ہر گز نہیں چھوڑیں گی۔ وہ اپنے دونوں بچوں کو آسودہ حال زندگی فراہم کرنے کے لیے اپنا کام جاری رکھیں گی۔

یاد رہے کہ سناء معطاط کو مراکش میں خواتین خاکروبوں کی ملکہ حسن کا اعزاز صرف ان کی ظاہری کشش اور روشن چہرے کے سبب حاصل نہیں ہوا بلکہ کام میں مہارت اور نظم و ضبط نے بھی اس سلسلے میں اہم کردار ادا کیا۔ مقابلے کا انعقاد اور خواتین خاکروبوں کو اعزازات سے نوازنے والی کمپنی نے شرط عائد کی تھی کہ جیت کے لیے خوب صورتی اور صفائی دونوں کا ہونا لازم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں