.

برطانوی لیبارٹری زہریلے اعصابی ایجنٹ کا ذریعہ ہوسکتی ہے: روسی سفیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یورپی یونین میں متعیّن روسی سفیر نے برطانیہ میں ایک سابق جاسوس کو زہر خورانی کے واقعے کے بارے میں ایک نیا دعویٰ کردیا ہے اور ان کا کہنا ہے کہ اس اعصابی ایجنٹ کا منبع ایک برطانوی لیبارٹری ہوسکتی ہے۔

ولادی میر چیزوف نے کہا ہے کہ روس کے پاس کیمیائی ہتھیاروں کا کوئی ذخیرہ ہے اور نہ سرگئی سکریپال اور ان کی بیٹی یولیا کو زہر دینے کے واقعے میں اس کا ہاتھ کارفرما ہے۔

چیزوف نے اتوار کے روز بی بی سی سے نشر ہونے والی اس گفتگو میں کہا کہ برطانیہ کی کیمیائی ہتھیاروں کی تحقیقاتی تنصیب پورٹون ڈاؤن سالسبری سے صرف آٹھ میل ( 12 کلومیٹر) دو ر واقع ہے۔برطانیہ کے اسی علاقے سے مسٹر سکریپال اور ان کی بیٹی بے ہوشی کی حالت میں ملے تھے۔

ان سے جب یہ سوال کیا گیا کہ کیا وہ یہ کہنا چاہتے ہیں کہ پورٹون ڈاؤن لیب اس واقعے کی ذمے دار ہے ؟ تو انھوں نے اس کا یہ جواب دیا :’’ میں نہیں جانتا‘‘۔

برطانوی حکومت نے روسی سفیر کے اس بیان کو غیر ذمے دار انہ اور فضول قرار دے کر مسترد کرد یا ہے۔

دریں اثناء لندن میں روسی سفیر الیگزینڈر یاکو وینکو نے ٹھنڈے دل ودماغ سے اس معاملے کو سلجھانے پر زوردیا ہے۔انھوں نے برطانوی اخبار دا میل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’ یہ تنازع خطرناک اور غیر متناسب صورت اختیار کرتا جا رہا ہے‘‘۔