یو اے ا ی : اسکول طلبہ کو مہنگا گھر کا کام دینے پر پابندی ، شارجہ میں فوری عمل درآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

متحدہ عرب امارات ( یو اے ای ) کی وزارتِ تعلیم نے ا سکولوں کے طلبہ کو مہنگا گھر کا کام دینے پر پابندی عاید کرد ی ہے ۔شارجہ کے تعلیمی زون نے اس فیصلے پر فوری عمل درآمد کا آغاز کردیا ہے۔

امارات سے شائع ہونے والے اخبار خلیج ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق اس فیصلے کا مقصد والدین کو بچوں کے اضافی تعلیمی اخراجات کے بوجھ سے نجات دلانا ہے جو انھیں اپنے بچوں کو اچھی تعلیم دلانے کے لیے ٹیوشن فیس کے علاوہ ادا کرنا پڑتے ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ والدین کو بعض اوقات اسکول میں زیر تعلیم کسی ایک بچے کے اکلوتے تعلیمی منصوبے کے لیے 60 ڈالرز تک ادا کرنا پڑجاتے ہیں اور یہ بھاری رقم تمام والدین کے بس کی بات نہیں ہے۔

وزارت ِتعلیم اسکولوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ طلبہ وطالبات کو اس طرح کے بیش قیمت منصوبوں کی بنیاد پر نمبر نہ دیں کیونکہ بہت سے والدین نے یہ شکایت کی ہے کہ ان تعلیمی منصوبوں کی تکمیل کے لیے کلپ بورڈ ، بیٹریاں اور اسٹکر وغیرہ خرید کرنا ان پر ایک معاشی بوجھ بن چکا ہے جبکہ بعض والدین کو بہ امر مجبوری تیار شدہ اشیاء بھی دکانوں سے خرید کرنا پڑتی ہیں۔

وزارت کا کہنا ہے کہ ایسے منصوبوں کو جماعت کے کمرے کے اندر ہی پایہ تکمیل کو پہنچایا جائے ۔اس نے یہ فیصلہ شارجہ کے ایک براہ راست ٹیلی ویژن اور ریڈیو شو کے دوران میں بہت سے والدین کی شکایات کے بعد کیا ہے۔اس شو میں شریک ایک والدہ نے یہ شکایت بھی کی تھی کہ اس کو اپنی بچی کے تعلیمی منصوبے کے لیے درکار مواد کے حصول کی غرض سے کئی روز تک اپنا قومی شناختی کارڈ اسکول کی انتظامیہ کے حوالے کرنا پڑا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں