.

بھارت: آتش بازی کی فیکٹری میں دھماکا، پانچ افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت میں آتش بازی کی ایک غیرقانونی فیکٹری میں زبردست دھماکے کے بعد آگ لگ گئی۔ پولیس کے مطابق بھارت کے مشرقی حصے میں پیش آنے والے اس واقعے کے نتیجے میں تین بچوں سمیت کم از کم پانچ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ غیرقانونی فیکٹری ایک گھر میں قائم کی گئی تھی۔ بھارت کی مشرقی ریاست جھاڑکھنڈ کے نالاندا ضلع میں قائم اس فیکٹری میں جمعرات کی شب زبردست دھماکا ہوا، جس کے نتیجے میں آس پاس کے پانچ مکانات کو شدید نقصان پہنچا۔ اس واقعے میں مزید 16 افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

مقامی پولیس افسر باگھا رام نے ٹیلی فون پر خبر رساں ادارے ڈی پی اے کو بتایا، ’’آتش بازی کا سامان تیار کرنے والی اس غیرقانونی فیکٹری میں دھماکے کے نتیجے میں ایک مرد، ایک 17 سالہ لڑکی اور دو برس سے کم عمر کے تین بچے ہلاک ہوئے ہیں۔ یہ تمام ہلاک شدگان ایک ہی خاندان کے معلوم ہوتے ہیں۔‘‘

بتایا گیا ہے کہ زخمی ہونے والوں کو ایک قریبی ہسپتال میں منتقل کیا گیا ہے، جن میں سے تین کی حالت تشویش ناک ہے۔ ڈی پی اے کے مطابق اس دھماکے کے بعد متاثرہ مقام پر آگ بڑھک اٹھی، جس پر فائربریگیڈ کے عملے نے دو گھنٹوں کی کوشش کے بعد قابو پایا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس فیکٹری میں بھاری مقدار میں آتش بازی کا مواد موجود تھا۔

واضح رہے کہ بھارت میں بغیر حکومتی اجازت نامے کے آتش بازی کا سامان تیار کرنے والی متعدد غیرقانونی فیکٹریاں قائم ہیں، جن میں سلامتی اور تحفظ سے متعلق بنیادی احتیاطوں سے پہلوتہی کی جاتی ہے اور اس انداز کے حادثے وقتاﹰ فوقتاﹰ رونما ہوتے رہے ہیں۔ گزشتہ برس جون میں ایسی ہی ایک غیرقانونی فیکٹری میں دھماکے کے نتیجے میں وسطی بھارت میں کم از کم 25 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔