.

تیونس: پارلیمنٹ کے اجلاس میں ہاتھا پائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس میں ہفتے کے روز ہونے والا پارلیمنٹ کا افتتاحی سیشن کافی ہنگامہ خیز رہا۔ اس دوران بعض ارکان کے درمیان الزامات کے تبادلے کے علاوہ نوبت ہاتھا پائی تک جا پہنچی۔

اس موقع پر ہنگامہ آرائی کے باعث Truth and Dignity Commission کی خاتون سربراہ بھی پارلیمنٹ میں خطاب نہیں کر سکیں جس کے بعد اسپیکر محمد الناصر نے اجلاس کو ملتوی کر دیا۔

تیونس کے وزیراعطم یوسف الشاہد نے جمعے کے روز اعلان کیا تھا کہ وہ اقتصادی اصلاحات پر عمل درامد کا عزم رکھتے ہیں جن میں عمومی ادارے شامل ہوں گے۔ الشاہد کا کہنا تھا کہ "ہم اصلاحات کے راستے پر چلیں گے خواہ اس کی جو بھی سیاسی قیمت ادا کرنی پڑے کیوں کہ تیونس کا مفاد اہم ترین ہے"۔

پارلیمنٹ سے خطاب میں تیونسی وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ "میں تماشائی بن کر رہنا اور اصلاحات کو غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کرنا قبول نہیں کروں گا"۔