اسکالر شپ پر دنیا بھر میں موجود سعودی طلبہ کے لیے مالی وظیفہ

اپنے خرچ پر بیرون ملک تعلیم پانے والے سعودی طلبہ بھی اس وظیفہ کے حق دار ہوں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے دنیا بھر میں اسکالر شپ پر زیرِ تعلیم تمام سعودی طلبہ و طالبات کے لیے فی کس 2 ہزار ڈالر کے مالی وظیفے کی منظوری دے دی ہے۔ اس اعلان میں وہ سعودی طلبہ بھی شامل ہوں گے جو اپنے ذاتی اخراجات پر دنیا کی کسی بھی منظور شدہ یونی ورسٹی میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ اس بات کا اعلان سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA نے بدھ کے روز کیا۔

وزارت خارجہ کے اعداد و شمار کے مطابق دنیا بھر میں اسکالر شپ پر بھیجے گئے سعودی طلبہ کی تعداد 90 ہزار کے قریب ہے۔ ان میں 850 طلبہ دنیا کی ٹاپ 10 یونی ورسٹیز میں زیر تعلیم ہیں۔ ان کے علاوہ 1600 مرد اور خواتین ڈاکٹر فیلو شپ اور ریذیڈنسی پروگرام میں شریک ہیں۔

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے اپنے امریکا کے دورے کے دوران باور کرا چکے ہیں کہ اسکالر شپ پر بیرون ملک مقیم طلبہ سعودی عرب کا روشن چہرہ ہیں۔

امریکا میں سعودی ثقافتی اتاشی ڈاکٹر محمد العیسی نے ایک اخباری بیان میں کہا کہ "معاملات کی تاخیر کے سبب طالب علم کو درپیش کسی بھی ضرر کی ذمے داری وزارت پر ہو گی"۔ انہوں نے مزید کہا کہ "متعلقہ سرکاری مشنری کی جانب سے طلبہ کی فیس میں ادائیگی میں تاخیر کے سبب اگر یونی ورسٹی اضافی فیس کا مطالبہ کرتی ہے تو اسے مشنری برداشت کرے گی"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں