.

سُنا ہے کہ آپ مجسّم شیطان ہیں: میٹس کا بولٹن سے مزاق !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چند روز قبل امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے قومی سلامتی کے نئے مشیر جان بولٹن کے درمیان پہلی ملاقات ہوئی۔ اس موقع پر کیمروں کی آنکھ نے ایک دل چسپ مزاح کو محفوظ کر لیا۔

دونوں شخصیات کے درمیان مصافحہ ہوا تو امریکی وزیر دفاع نے بولٹن سے کہا کہ "آپ کے آنے کا شکریہ، مجھے خوشی ہے کہ آخرکار ہماری ملاقات ہو گئی۔ میں نے سُن رکھا تھا کہ آپ مجسّم شیطان ہیں"۔

اس سے قبل جیمز میٹس نے اُن دشواریوں پر گفتگو کرنے سے انکار کر دیا تھا جو انہیں بولٹن کے ساتھ کام کرتے ہوئے درپیش ہو سکتی ہیں۔ میٹس کا کہنا تھا کہ انہیں "کسی قسم کے تحفظات اور تشویش نہیں ہے"۔

ایرانی جوہری معاہدے سے دست برداری اور شمالی کوریا پر "اقدامی حملے" کی تائید کے حوالے سے جان بولٹن کے سخت گیر موقف سے متعلق سوال کے جواب میں میٹس نے کہا کہ "میں اس بات کی امید رکھتا ہوں کہ دنیا کی صورت حال کے حوالے سے مختلف آراء ہوں گی۔ ہمیں اس چیز کی ضرورت ہے"۔

یاد رہے کہ امریکی صدر نے 23 مارچ بروز جمعرات اپنے قومی سلامتی کے مشیر ایچ آر مکماسٹر کو تبدیل کر کے ان کی جگہ اقوام متحدہ میں امریکا کے سابق سفیر جان بولٹن کو مقرر کرنے کا اعلان کیا تھا۔ ٹرمپ نے ٹوئیٹر پر کہا تھا کہ "مورخہ 9 اپریل سے جان بولٹن میرے قومی سلامتی کے مشیر ہوں گے۔ میں جنرل مکماسٹر کی خدمات پر ان کا بہت ممنون ہوں، انہوں نے شان دار کام کیا اور وہ ہمیشہ میرے دوست رہیں گے"۔