.

یورو کنٹرول کا کمپیوٹر نظام بیٹھ گیا ،یورپی ہوائی اڈوں پر ہزاروں مسافر خوار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

براعظم یورپ کے فضائی ٹریفک کی ذمے داری ایجنسی یورو کنٹرول کا کمپیوٹر نظام بیٹھ جانے سے منگل کے روز کل پروازوں میں سے نصف تاخیر کا شکار ہوگئی ہیں جس کی وجہ سے یورپی ممالک کے ہوائی اڈوں پر ہزاروں مسافروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑر ہا ہے۔

نیدر لینڈز کے شہر ایمسٹرڈیم کے شیفول سمیت یورپی یونین کے رکن ممالک کے ہوائی اڈوں پر کمپیوٹر نظام میں خرابی کی بنا پر پروازیں تا خیر کا شکار ہورہی ہیں اور ان کی انتظامیہ نے مسافروں کو مسئلے کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ہوائی اڈوں پر آمد سے قبل اپنی پروازوں کے روانہ ہونے کے وقت کی تصدیق کرلیں ۔

یورو کنٹرول نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ آج یورپی نیٹ ورک میں 29500 پروازوں کی آمد ورفت متوقع تھی ۔ان میں سے قریباً نصف کو سسٹم خراب ہونے سے تاخیر کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے‘‘۔

برسلز میں قائم اس ایجنسی نے کہا کہ اس نقص کے سبب کا پتا چلا لیا گیا ہے اور اب اس کو دور کرنے اور معمول کے آپریشن کی بحالی کے لیے کام جاری ہے لیکن یہ نقص شام تک دور نہیں ہوسکے گا۔ یورو کنٹرول کے ترجمان نے اے ایف پی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’ ہمیں پہلے کبھی اس قسم کی صورت حال کا سامنا نہیں ہوا ہے‘‘۔

یورپی ممالک کے فضائی نظام میں یہ گڑ بڑ عیسائیوں کے تیوہار ایسٹر کے ایک روز بعد ہوئی ہے۔ایسٹر کی چھٹیوں کے دوران میں ہزاروں مسافروں یورپی ممالک کے سفر پر نکلے تھے۔فضائی نظام میں خرابی کے علاوہ فرانس میں انھیں ریل پر سفر کے دوران بھی دشواری کا سامنا کرنا پڑا ہے کیونکہ وہاں ملازمین نے صدر عمانوایل ماکروں کی اصلاحات کے خلاف ہڑتال کررکھی تھی۔

کمپیوٹر نظام میں خرابی کے بعد برسلز کے ہوائی اڈے سے ایک گھنٹے میں صرف دس پروازیں روانہ کی جارہی تھیں۔اس کی ویب سائٹ کے مطابق اس ہوائی اڈے سے روزانہ 650 پروازیں روانہ ہوتی یا ان کی آمد ہوتی ہے۔ہیلسنکی ، پراگ اور کوپن ہیگن کے ہوائی اڈوں کی انتظامیہ نے بھی پروازوں کی روانگی میں تاخیر کی اطلاع دی ہے۔

یورو کنٹرول کا کہنا تھا کہ ’’ جدید ٹیکٹیکل فلو مینجمنٹ سسٹم میں خرابی پیدا ہوئی تھی۔یہ نظام براعظم بھر میں فضائی ٹریفک کی طلب کا سراغ لگاتا اور پھر اس کا انتظام کرتا ہے‘‘۔اس ایجنسی نے قبل ازیں ایک بیان میں کہا تھا کہ کمپیوٹر نظام کی بحالی کے لیے متبادل بندوبست کیا جارہا ہے اور یورپی نیٹ ورک کی صلاحیت میں 10 فی صد تک کمی واقع ہوسکتی ہے۔

اس نے بتایا تھا کہ اس کا گرینچ معیاری وقت کے مطابق 1026 جی ایم ٹی پر پروازوں کا فائل کیا گیا پلان کھو گیا تھا اور اس نے فضائی کمپنیوں سے کہا تھا کہ وہ دوبارہ یہ پلان وضع کر کے دیں ۔اس نے مزید کہا تھا کہ اس فنی خرابی سے ائیر ٹریفک کنٹرول پر براہ راست کوئی فرق پڑا ہے اور نہ تحفظ کے حوالے سے اس کے کوئی مضمرات ہوں گے۔