.

روس کی ترکی کو ’ایس 400‘ میزائل پروگرام کی فراہمی کی یقین دہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی صدر ولادی میر پیوتن نے کہا ہے کہ ان کے ملک نے ترکی کو جدید ترین فضائی دفاعی نظام ’ایس 400‘ کی فراہمی کا معاہدہ کیا ہے۔ روس ترجیحی بنیادوں پریہ نظام انقرہ کو دے گا جو کہ دونوں ملکوں کے درمیان طے پائے دفاعی معاہدے کا حصہ ہے۔

روسی ذرائع ابلاغ کے مطابق صدر پیوتن نے زور دے کر کہا کہ ماسکو جدید ترین میزائل دفاعی شیلڈ’ایس 400‘ کی جلد فراہمی کو یقینی بنائے گا۔

اپنے ترک ہم منصب رجب طیب ایردوآن سے ملاقات کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ہم نے باہمی ملاقات میں روس کے جدید ترین دفاعی نظام ‘ایس 400‘ کی انقرہ کو جلد فراہمی پر بھی بات چیت کی ہے اور ہم اس معاہدے پر تیزی کے ساتھ عمل درآمد کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

ادھر ایک دوسرے سیاق میں ترک صدر ایردوآن اور ولادی میر پیوتن نے ترکی میں جوہری ری ایکٹر کی تعمیر کے لیے ایک ورک شاپ کا آغازکیا ہے۔ یہ جوہری تنصیب روسا ٹوم گروپ کی زیرنگرانی قائم کیا جائے گا۔ یہ اقدام بھی انقرہ اور ماسکو کے درمیان بڑھتے فوجی تعاون کی دلیل ہے۔