.

سعودی عرب میں 18 اپریل کو پہلا سینما گھر کھلے گا

2030ء تک مختلف شہروں میں 350 سینما گھر کھولے جائیں گے،2500 سکرینیں نصب ہوں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے 18 اپریل کو دارالحکومت الریاض میں مملکت کے پہلے سینما گھر کے افتتاح کا اعلان کیا ہے۔

سعودی عرب کی وزارت اطلاعات نے اس امر کی تصدیق کی ہے کہ 2030ء تک مختلف شہروں میں 350 سینما گھر کھولے جائیں گے اور ان میں 2500 سکرینیں نصب کی جائیں گی۔

15 شہروں میں 40 سینما گھر

سعودی عرب نے تفریح کے شعبے اور صنعت کو ترقی دینے کے لیے آیندہ پانچ سال کے دوران میں 15 شہروں میں 40 سینما گھر کھولنے کا اعلان کیا ہے۔

سعودی عرب کی جنرل انٹرٹینمنٹ اتھارٹی نے بدھ کو امریکا کی کمپنی اے ایم سی کے ساتھ ایک سمجھوتا طے پانے کی بھی اطلاع دی ہے۔اس کے تحت اس کمپنی کو سعودی عرب میں سینما گھر چلانے کے لیے لائسنس جاری کیا گیا ہے۔اس اجازت نامے کے اجرا کا اعلان سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے امریکا کے شہر لاس اینجلس کے دورے کے موقع پر کیا گیا ہے۔

اے ایم سی کی امریکا میں سب سے بڑی مووی مارکیٹ ہے ۔دنیا کی سب سے بڑی سینما چین کی مالک بھی یہی کمپنی ہے۔اس کے صرف یورپ میں 244 تھیٹر اور 2200 سکرینیں ہیں۔ امریکا میں اس کے تھیٹروں کی تعداد 661 اور سکرینوں کی تعداد 8200 سے زیادہ ہے۔

سعودی عرب نے حال ہی میں تفریح کے شعبے کو ترقی دینے کے لیے مختلف اقدامات کیے ہیں اور اس شعبے میں کام کرنے والی دنیا کی بڑی کمپنیوں سے سمجھوتے طے کیے ہیں ۔ان میں ایک سِکس فلیگز کے ساتھ طے پایا ہے جس کے تحت یہ کمپنی مملکت میں تفریحی پارک بنائے گی ۔سعودی حکومت نے مملکت میں القادیہ کے نام سے ایک بڑا ثقافتی ، تفریحی اور کھیلوں کا مرکز بھی قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

سعودی حکام کے مطابق تفریحی شعبے میں آیندہ دس سال کے دوران میں 64 ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری کی جائے گی۔نیز خواتین کو بھی کنسرٹس میں شرکت کی اجازت ہوگی۔

روزگار کے مواقع

سعودی عرب کی وزارتِ ثقافت اور اطلاعات کے تخمینے کے مطابق مملکت میں سینماؤں کے کھلنے سے مجموعی قومی پیداوار ( جی ڈی پی ) میں 24 ارب ڈالرز کا سالانہ اضافہ ہوگا۔

وزارت کے مطابق سینما کی صنعت سے روزگار کے ہزاروں نئے مواقع پیدا ہوں گے اور اس کے مجموعی طور پر قومی معیشت پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔اس سے اقتصادی شرح نمو میں اضافہ ہوگا اور میڈیا منڈی کو فروغ ملے گا۔

سینما کی صنعت کی ترقی سے 2030ء تک کل وقتی تیس ہزار سے زیادہ ملازمتوں کے مواقع پیدا ہوں گے۔اس کے علاوہ ایک لاکھ تیس ہزار سے زیادہ جز وقتی روزگار کے مواقع میسر آئیں گے۔

سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی برائے سمعی وبصری میڈیا کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے حال ہی میں ملک میں سینما تھیٹرز کھولنے کے خواہاں افراد کو لائسنس کے اجراء کی منظوری دی ہے۔

یادرہے کہ 1930ء کے عشرے میں سعودی عرب میں کام کرنے والے مغربی ملازمین کے لیے نجی عمارتوں میں سینما تھیٹر کھولے گئے تھے۔یہ سینماگھر سعودی عرب کی بڑی تیل کمپنی آرامکو نے قائم کیے تھے۔ تب آرامکو کی پیش رو کمپنی کا نام کیلی فورنیا عرب اسٹینڈرڈ آئیل کمپنی تھا۔