.

جرمنی : گاڑی تلے روندنے سے 3 افراد ہلاک ، 20 زخمی ، ڈرائیور کی خودکشی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی کے مغربی شہر موئنسٹر میں ایک ڈرائیور نے اپنی گاڑی راہ گیروں پر چڑھا دی ہے جس کے نتیجے میں تین افراد ہلاک اور کم سے کم بیس زخمی ہوگئے ہیں ۔اس گاڑی کے ڈرائیور نے بعد میں خود کشی کرلی ہے۔

جرمنی کی خبررساں ایجنسیاں ڈی پی اے نے موئنسٹر شہر کے وسط میں واقع ایک مصروف چوک میں ہفتے کی دوپہر راہ گیروں پر کار چڑھانے کے اس واقعے کی اطلاع دی ہے۔ اس شہرمں پولیس کی خاتون ترجمان نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس گاڑی کے ڈرائیور نے راہ گیرو ں پر گاڑی چڑھانے کے بعد خود کو گولی مار لی ہے اور واقعے میں کم سے کم تیس افراد زخمی ہوئے ہیں۔

قبل ازیں پولیس نے ٹویٹر پر ایک بیان میں گاڑی کے کچلنے سے بعض ہلاکتوں اور زخمیوں کی تصدیق کی ہے لیکن اس نے فوری طور دہشت گردی کے حملے کو خارج ازامکان قرار دیا تھا۔زخمیوں میں چھے کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔

علاقائی پولیس نے ٹویٹر پر ایک بیان میں کہا کہ ’’ اس واقعے میں ہلاکتیں ہوئی ہیں اور بعض افراد زخمی ہیں ۔ مہربانی کرکے اس علاقے میں جانے سے گریز کیا جائے۔ہم جائے وقوعہ پر موجود ہیں‘‘ ۔ پولیس نے شہریوں پر یہ بھی زور دیا تھا کہ وہ واقعے سے متعلق قیاس آرائیوں سے گریز کریں ۔

مشہور جریدے اسپیگل کے آن لائن ایڈیشن کے مطابق جرمن حکام اس مفروضے پر کام کررہے ہیں کہ یہ واقعہ ایک حملہ تھا لیکن ابھی تک سرکاری طور پر اس کی تصدیق نہیں کی گئی ہے۔

جرمن چانسلر اینجیلا میرکل کی خاتون ترجمان نے اس گاڑی حملے میں انسانی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے اور ان کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔