امارات کی صومالیہ میں ہوائی جہاز روکے جانے کی شدید مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

متحدہ عرب امارات نے مملکت میں ایک ہوائی جہاز کو صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں روکے جانے، طیارے میں سوار اماراتی فوجیوں کو ہراساں کرنے اور اس میں رکھی رقم ضبط کرنے کی شدید مذمت کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اماراتی حکومت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ امارات کا ایک ہوائی جہاز 8 اپریل کو موغادیشو کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر روک لیا گیا۔ طیارے پر 47 اماراتی سیکیورٹی اہلکار سوار تھے۔ نہ صرف ہوائی جہاز کو روکا گیا بلکہ اس میں صومالی فوج کے لیے لائی گئی رقم بھی قبضے میں لے لی گئی تھی۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ گن پوائنٹ پر اماراتی سیکیورٹی اہلکاروں کو روکنا اور ان سے رقم قبضے میں لینا دو طرفہ معاہدوں اور عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے۔

اماراتی سرکاری نیوز ایجنسی ’وام‘ کے مطابق موغادیشو ہوائی اڈے پر پیش آنے والے اس واقعے کے بعث ہوائی جہاز کئی گھنٹے تاخیر کا شکار ہوا ہے۔ اماراتی حکومت کا کہنا ہے کہ طیارے میں رکھی گئی رقم صومالیہ کی فوج کی مدد کے لیے بھیجی گئی تھی۔ سنہ 2014ء میں دونوں ملکوں کے درمیان طے پائے ایک معاہدے کے تحت دو طرفہ فوجی تعاون کے شعبے میں مدد کے لیے یہ رقم صومالیہ بھیجی گئی تھی۔

اماراتی وزارت خارجہ و عالمی تعاون کی طرف سے جاری کردہ بیان میں صومالیہ میں طیارہ روکنے کو عالمی قوانین، بین الاقوامی ضابطوں اور ممالک کے درمیان پائے جانے والے سفارتی تعلقات کے منافی قرار دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں