.

کیا ٹرمپ میلانیا کو رام کرنے کے لیےFBI سے مدد مانگیں گے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ایوان صدر میں عالمی مسائل پر بحث کے ساتھ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مبینہ معاشقے بھی ایک بڑا موضوع ہیں۔ حال ہی میں ’ایف بی آئی‘ کے سابق ڈائریکٹر جیمز کومی کی کتاب میں صدر ٹرمپ کے ایک پورن اسٹار کے ساتھ مبینہ جنسی مراسم نے ٹرمپ کو آگ بگولا کر دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جیمز کومی نے اپنی کتاب میں انکشاف کیا ہے کہ صدر ٹرمپ جلد ہی پورن سٹار سٹورمی ڈینیئلز کے خلاف تحقیقات شروع کریں گے تاکہ اپنی اہلیہ اور خاتون اول میلانیا ٹرمپ کو مطمئن کیا جا سکے۔

اس کتاب میں جیمز کومی نے ٹرمپ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے صدر کو ’فطری کذاب‘ اور اخلاقی دیوالیہ پن کا شکار لیڈر قرار دیا۔ اس پر ٹرمپ نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کومی کے دعوؤں کو من گھڑت قرار دیا تھا۔

اخبار ’نیویارک پوسٹ‘ نے جیمز کومی کے آنے والی کتاب کے بعض اقتباسات شائع کیے ہیں۔ ان میں کہا گیا ہے کہ ٹرمپ نے پورن اسٹار کے ساتھ جنسی تعلقات کے دعوؤں کو محض جھوٹ قرار دیتے ہوئے ان کی تحقیقات پر زور دیا ہے۔

’ایف بی آئی‘ کے سابق چیف جنہیں گذشتہ برس ٹرمپ نے عہدے سے ہٹا دیا تھا کا کہنا ہے کہ میں نے صدر ٹرمپ سے کہا تھا کہ میلانیا کے لیے پورن اسٹار ڈینیئلز کے دعوؤں پر یقین کرنے کا صرف ایک فی صد امکان ہے۔

جیمز کومی نے ٹرمپ کو خبردار کیا تھا کہ اگر انہوں نے معاملے کی تہہ تک جانے کے لیے تحقیقات کی کوشش کی تو اس سے صدر نجی سطح پر ہدف بن سکتے ہیں۔

اپنی کتاب میں کومی نے اس واقعے کا بھی ذکر کیا ہے کہ سنہ 2013ء میں ماسکو میں ایک ہوٹل میں قیام کے دوران جنسی ہوس پوری کرنے کے لیے ٹرمپ کو طوائفوں کی خدمات مہیا کی گئی تھیں۔ اس ہوٹل میں سابق صدر باراک اوباما نے بھی ایک رات کیا تھا۔

صدر ٹرمپ نے اس دعوے کو بھی بے بنیاد قرار دے کر مسترد کر دیا تھا اور کہا تھا کہ یہ تمام جعلی باتیں سابق برطانوی جاسوس کریسٹوفر اسٹیل نے اکھٹی کی تھیں۔

خیال رہے کہ جیمز کومی کی کتاب ’ Top loyalty: truth, lies and leadership‘ آئندہ منگل کو منظرعام پر آ رہی ہے۔ اس کتاب میں پہلی بار کومی نے ٹرمپ کے ساتھ کانگریس کے سامنے گواہی دیتے ہوئے اپنی ملاقاتوں کا احوال بیان کیا ہے۔