.

سعودی عرب نے شام میں کیمیائی تنصیبات پر فضائی حملوں کی حمایت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے امریکا کی قیادت میں سہ ملکی اتحاد کے شام میں کیمیائی تنصیبات پر فضائی حملوں کی حمایت کردی ہے۔

سعودی وزارت خارجہ نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ہم شام میں فوجی اہداف کے خلاف کارروائیوں کی مکمل حمایت کرتے ہیں‘‘۔

وزارتِ خارجہ کے ایک ذریعے نے کہا ہے کہ امریکا کی قیادت میں اتحاد کی فوجی کارروائیاں شامی رجیم کی جانب سے مسلسل ممنوعہ کیمیائی ہتھیاروں کے بے گناہ شہریوں کے خلاف استعمال کے ردعمل میں کی جارہی ہیں ۔شامی عوام کے خلاف گذشتہ کئی برسوں سے ان سنگین جرائم کا ارتکاب کیا جارہا تھا۔

اس سعودی ذریعے نے شامی رجیم کو ان ملٹری آپریشنز کا ذمے دار قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ عالمی برادری بھی اس کے خلاف کوئی کارروائی کرنے میں ناکام رہی تھی۔

دریں اثناء بحرین نے بھی شام میں فوجی تنصیبات کے خلاف اہدافی حملوں کی حمایت کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے یہ حملے شامی شہریوں کے تحفظ اور کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو روکنے کے لیے ناگزیر ہوچکے تھے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جمعہ کی شب امریکا ، برطانیہ اور فرانس کے شام میں مشترکہ آپریشن کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ اس میں بشار الاسد کے’’ مجرم رجیم‘‘ کو ہدف بنایا جارہا ہے اور مبیّنہ کیمیائی حملے سے کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔