شام پر حملے : ایرانی سپریم لیڈر نے ٹرمپ ، ماکروں اور مے کی مذمت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ، فرانسیسی صدر عمانو ایل ماکروں اور برطانوی وزیراعظم تھریز ا مے کی شام رجیم کے خلاف حملوں پر مذمت کردی ہے اور انھیں مجرم قراردیا ہے۔

خامنہ ای نے اپنے ٹیلی گرام چینل پر بیان میں کہا ہے کہ ’’ آج (ہفتے کی ) صبح شام پر حملہ ایک جرم ہے۔امریکی صدر ، فرانسیسی صدر اور برطانوی وزیراعظم تھریزا مے مجرم ہیں ۔ انھیں اس سے کچھ حاصل نہیں ہوگا‘‘۔

انھوں نے تہران میں ہفتے کے روز سیاسی اور عسکری قیادت کے اعلیٰ سطح کے اجلاس میں کہا کہ ’’ امریکی صدر یہ کہتے ہیں، انھوں نے شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے خلاف جنگ کے لیے حملہ کیا ہے تو وہ جھوٹ بول رہے ہیں‘‘ ۔

امریکا ، برطانیہ اور فرانس نے قبل ازیں کہا ہے کہ انھوں نے شامی حکومت کی فوجی تنصیبات کے خلاف ایک ہفتے قبل دوما میں شہریوں پر کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے رد عمل میں فضائی حملے کیے ہیں۔

شامی حکومت اور اس کے اتحادی ممالک ایران اور روس باغیوں کے زیر قبضہ شہر پر کیمیائی ہتھیاروں سے حملے میں کسی قسم کے کردار کی تردید کرچکے ہیں لیکن مذکورہ تینوں ممالک نے شامی رجیم ہی کو شہریوں پر کیمیائی حملوں کا ذمے دار قرار دیا ہے اور ان کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اس ضمن میں ٹھوس شواہد موجود ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں