.

ائیر چائنا کی پرواز میں عملہ کے رکن کو ’’قلم کے ہتھیار‘‘ سے یرغمال بنانے کی کوشش

بیجنگ جانے والے مسافر طیارے کا رُخ چین کے وسطی شہر ژنگ ژو کی جانب موڑ دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چین کی قومی فضائی کمپنی کی ایک پرواز میں مسافر نے فاؤنٹین قلم کو ہتھیار کے طور پر استعمال کرتے ہوئے عملہ کے ایک رکن کو یرغمال بنانے کی کوشش کی ہے جس کے بعد اس پرواز کا رُخ بیجنگ کے بجائے ملک کے وسطی شہر کی جانب پھیر دیا گیا۔

چین کی سول ایوی ایشن اتھارٹی کے مطابق ائیر چائنا کی پرواز 1350 کے تمام مسافر اور عملہ کے ارکان ژنگ ژو کے ہوائی اڈے پر اتوار کی صبح دس بجے اتر گئے ہیں ۔یہ پرواز صبح آٹھ بج کر 40 منٹ پر صوبہ ہونان کے شہر چانگ شا سے دارالحکومت بیجنگ کے لیے روانہ ہوئی تھی اور اس نے گیارہ بجے منزل مقصود پر پہنچنا تھا۔

اتھارٹی نے اپنی ویب سائٹ پر ایک بیان میں کہا ہے کہ طیارے میں سوار ایک مرد مسافر نے ایک فلائٹ اٹنڈنٹ کو یرغمال بنا لیا تھا ۔اس کے بعد پرواز کا رخ موڑ دیا گیا تھا۔اس معاملے کو ایک بج کر 17 منٹ پر سلجھا لیا گیا ہےلیکن اس نے مزید تفصیل نہیں بتائی ہے اور نہ یہ بتایا ہے کہ مشتبہ مسافر کے ساتھ کیا معاملہ کیا گیا ہے۔

اس پرواز کو ژنگ ژو کے ہوائی اڈے پر ہنگامی طور پر اتارنے کے لیے اقدامات کیے گئے تھے اور پولیس اور امدادی رضاکاروں کو بھی طلب کر لیا گیا تھا۔ بعض مسافروں کے مطابق وہ جب طیارے سے اترے تو باوردی پولیس اہل کاروں نے اس کو چاروں طرف سے گھیر رکھا تھا۔

تاہم اتھارٹی کے بیان کے مطابق طیارے سے اترنے والے مسافر خوش گوار موڈ میں تھے اور ہوائی اڈے پر معمول کی سرگرمیاں جاری رہی ہیں ۔فضائی کمپنی کا کہنا ہے کہ ان مسافروں کو بیجنگ روانہ کرنے کے لیے ایک اور پرواز کا بندوبست کیا جارہا ہے۔