پاکستان کی سرحد کے نزدیک ایرانی علاقے میں مسلح جھڑپ، 6 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کی سرحد کے نزدیک واقع ایران کے علاقے میں مسلح جھڑپ میں تین مبینہ دہشت گرد اور سکیورٹی فورسز کے تین اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں ۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی ارنا نے منگل کے روز اطلاع دی ہے کہ ’’ رات مقامی وقت کے مطابق ڈیڑھ بجے ( گرینچ معیاری وقت 2100 جی ایم ٹی) کے قریب پاکستان کے سرحدی علاقے کی جانب سے آنے والے دہشت گردوں کے ایک گروپ نے میر جاوہ کے علاقے میں ایک پولیس چوکی پر حملہ کیا تھا‘‘۔یہ علاقہ صوبہ سیستان، بلوچستان کے دارالحکومت زاہدان سے 75 کلومیٹر جنوب مشرق میں واقع ہے۔

ایجنسی کے بیان کے مطابق جھڑپ میں تین حملہ آور ہلاک ہوئے ہیں اور ایک پولیس افسر اور ایرانی پاسداران انقلاب کے دو اہلکار مارے گئے ہیں ۔

واضح رہے کہ سیستان ،بلوچستان کی اکثریتی آبادی سنی مذہب کی پیروکار ہے اور وہ بلوچ نسل سے رکھتے ہیں ۔اس صوبے میں جنگجو پہلے بھی ایرانی سکیورٹی فورسز پر حملے کرتے رہتے ہیں ۔2005ء سے 2010ء تک اس صوبے میں بلوچ سنی گروپ جند اللہ نے ایرانی سکیورٹی فورسز کے خلاف ایک طویل مزاحمتی جنگ لڑی تھی لیکن اس گروپ کے لیڈر وں کی کریک ڈاؤن کارروائیوں میں ہلاکتوں اور پھانسیوں کے بعد سے یہ تشدد آمیز تحریک دم توڑ چکی ہے۔البتہ اب بعض دوسرے چھوٹے گروپ وہاں برسر پیکار ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں