تین چہروں والے جیروم ھامون سے ملیے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

آپ ذرا تصور کریں کہ زندگی میں آپ کو تین مختلف چہروں کے ساتھ زندگی گذارنی پڑے تو کیسا لگے گا۔ فرانس سے تعلق رکھنے والے جیروم ھامون حقیقی طورپر تین چہروں کے ساتھ اس دنیا میں زندگی گذار رہیں۔ انہیں تین مختلف چہروں کی وجہ سے’تین چہرہ شخص‘ بھی کہا جاتا ہے۔ وہ دنیا کے واحد انسان ہیں جو اپنے چہرے کی دو بار سرجری کرا چکے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق 43 سالہ جیروم ھامون اس وقت اپنے تیسرے چہرے کے ساتھ ہیں۔ انہوں نے اپنے چہرے کی پہلی سرجری جولائی 2010ء میں کرائی تھی۔ یہ اس کی اس وقت پورے چہرے کی پہلی سرجری تھی اور اس کا اہتمام پیرس سے باہر کیا گیا۔

اسی سال 2010ء میں جیروم ھامون کو نزلہ زکام کا علاج کرنا پڑا جس میں دی جانے والی اینٹی بائیوٹیک ادویات ایمیونٹی کے علاج سے مطابقت نہیں رکھتی تھیں اور ان ادویات نے اس کے جسم پر منفی اثرات مرتب کیے۔

سنہ 2010ء میں اس کا چہرہ خراب ہونا شروع ہوا اور ان ادویات کے اثرات اس کے چہرے پر ظاہر ہونے لگے۔ بالآخر ڈاکٹروں کو نومبر 2016ء کو ماھون کے چہرے کی ایک اور سرجری کرنا پڑی۔

جیروم ہامون ایک ایسی جینیاتی تبدیلی کا شکار ہوئے جس کے نتیجے میں چہرے پر خطرناک ٹیومر پیدا ہوئے اور انہوں نے چہرے کی شکل بگاڑ دی۔ وہ ایک اسپتال میں بغیر چہرے کے دو ماہ تک رہے۔ یہاں تک کہ ایک شخص نے اپنا چہرہ عطیہ کیا اور اس کے دوسرے چہرے کی پیوند کاری کی گئی۔

تین ماہ قبل ہونے والی سرجری کے بعد وہ ابھی تک علاج کے عمل سے گذر رہا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ جلد ہی ایک نئے چہرے کے ساتھ سامنے آئے گا۔

گذشتہ ہفتے جیروم ھامون نے صحافیوں سے بھی بات چیت کی۔ اس کا کہنا تھا کہ وہ 15 اور 16 جنوری کو نئی سرجری کے عمل سے گذرا ہے اور اب وہ خود کو بہتر محسوس کرتا ہے۔

اس کا کہنا تھا کہ وہ علاج کے ایک مشکل مرحلے سے گذرا ہے اور بات چیت کرنے میں اسے دقت محسوس ہوتی ہے مگر اس سے گذرنے کے لیے وہ مزید انتظار نہیں کر سکتا تھا۔

ھامون کا کہنا ہے کہ وہ دنیا کا پہلا شخص ہے جس نے اپنے چہرے کی دو بار سرجری کرائی ہے۔

جیروم ھامون کی چہرے کی سرجری اور دو بار پیوند کاری سے یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ آیا طبی طور پر ایسا ممکن ہے؟۔ فرانسیسی ڈاکٹر پروفیسر لانٹیری کا کہنا ہےکہ جیروم ھامون کے چہرے کی دو بار پیوند کاری اور سرجری نے عملا ثابت کیا ہے کہ کسی بھی شخص کی دو بار چہرے کی پیوندکاری کی جا سکتی ہے۔

امراض گردہ کے ماہر ڈاکٹر ایرک تھیرفیت کا کہنا ہے کہ جیروم ھامون کی سرجری کے عمل سے قبل تین ماہ تک اسے زیرعلاج رکھا گیا جہاں اس کے خون کے حوالے سے خصوصی ادویات دی گئیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ھامون کے حوالے سے بہت سے خدشات تھے مگر اس کی سرجری کامیاب رہی۔ وہ خوش قسمت ہے کہ اسے بہت زیادہ تکلیف سے نہیں گذرنا پڑا۔

خیال رہے کہ دنیا بھر میں اب تک چہرے کی سرجری کے کل 40 واقعات سامنے آئے ہیں۔ چہرے کی پہلی سرجری شمالی فرانس میں 2005ء میں ایزابیل ڈینوار نامی ایک خاتون کی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں