بحرین : 24 شیعہ افراد کو دہشت گرد گروپ تشکیل دینے پر جیل کی سزائیں ، شہریت منسوخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بحرین میں ایک عدالت نے 24 شیعہ افراد کو ایک دہشت گرد گروپ تشکیل دینے اور تخریبی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزامات میں قصور وار قرار دے کر مختلف مدت کی قید کی سزائیں سنائی ہے اور ان تمام کی بحرین کی شہریت منسوخ کردی ہے۔

بحرین کے ایک عدالتی ذریعے نے بتایا ہے کہ ان مشتبہ افراد پر ایک دہشت گرد گروپ کی تشکیل کے علاوہ ہتھیار چلانے اور دھماکا خیز مواد کی تیاری کی تر بیت کے لیے عراق اور ایران جانے اور پولیس افسروں کے قتل کی سازش کے الزامات بھی عاید کیے گئے تھے۔

بحرین کی اعلیٰ فوجداری عدالت نے ان میں دس مجرموں کو عمر قید ، دس کو دس ،دس سال اور چار کو تین سے پانچ سال تک قید کی سزاؤں کو حکم دیا ہے۔

ان میں بعض مجرمان گذشتہ سال بحرین کی باپکو ریفائنری اور سعودی عرب کی بڑی تیل کمپنی آرامکو کے درمیان تیل پائپ لائن کو دھماکے سے اڑا نے کے واقعے میں بھی ملوث بتائے گئے ہیں ۔اس دھماکے کے بعد سعودی صوبے ظہران اور باپکو ریفائنری کے درمیان پائپ لائن سے تیل کی ترسیل منقطع ہوگئی تھی اور اس کی مرمت کے بعد اس کو بحال کیا جاسکا تھا۔

منامہ کی حکومت نے فروری میں اس تیل پائپ لائن پر حملے کے الزام میں چار مشتبہ افراد کو گرفتار کرنے کی اطلاع دی تھی اور ایران پر ان میں سے دو افراد کو عسکری تربیت دینے کا الزام عاید کیا تھا لیکن ایران نے اس کی تردید کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں