.

ملائیشیا میں قتل ہونے والے فلسطینی پروفیسر کے خلاف کس طرح گھات لگائی گئی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ملائیشیا کے دارالحکومت کوالالمپور میں ایک فلسطینی پروفیسر ڈاکٹر فادی البطش کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے قتل کر دیا۔ قاتلوں نے 35 سالہ فادی کی کئی روز تک ریکی کی۔ اس کے بعد جمعے کے روز انہیں اُس وقت نشانہ بنایا گیا جب وہ حسب معمول فجر کی نماز ادا کرنے کے لیے قریبی مسجد جا رہے تھے۔ فادی نے الیکٹرک انجینئرنگ میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی ہوئی تھی۔ وہ ایک محقق سائنس داں اور توانائی کی ٹکنالوجی سے متعلق امور کے ماہر تھے۔

مقامی ویب سائٹ میٹرو آن لائن کے بنائے ہوئے گرافکس کے مطابق قاتلوں نے جمعے کے روز صبح چھ بجے تقریبا 20 منٹ تک اس عمارت کے نزدیک فادی کا انتظار کیا جہاں وہ مقیم تھا۔ یہ قاتل BMW کمپنی کی 1100 سی سی کی جدید ترین موٹر بائیک پر تھے۔

فادی اپنی عمارت سے نکل کر جوں ہی فٹ پاتھ پر نظر آیا ان میں سے ایک قاتل نے نزدیک آ کر فادی پر 10 گولیاں برسا دیں۔ ان میں سے ایک گولی براہ راست فادی کے سر میں لگی جب کہ 3 گولیاں سینے میں پیوست ہو گئیں۔ فادی نے موقع پر ہی دم توڑ دیا جس کے فورا بعد دونوں افراد مختلف سمتوں میں فرار ہو گئے۔

سڑک پر نصب سکیورٹی کیمرے نے دونوں افراد کی وڈیو محفوظ کر لی جب وہ فادی کا انتظار کر رہے تھے۔ دونوں افراد نے سر پر بائیک چلانے والوں کا ہیلمٹ پہن رکھا تھا۔ ابتدائی طور پر یہ کہا جا رہا ہے کہ دونوں افراد ملائیشین نہیں تھے۔

اتوار کے روز ایک نئی مختصر وڈیو سامنے آئی ہے جس میں ڈاکٹر فادی کی 31 سالہ بیوہ ایناس نمودار ہوئی ہے۔ فادی کے تین بچّے بھی ہیں جن کی عمر 6 برس، 5 برس اور ایک برس ہے۔ وڈیو میں دو خواتین ایناس کو اس ہسپتال سے باہر لے کر آ رہی ہیں جہاں اس کے شوہر کی میت منتقل کی گئی تھی۔

ملائیشیا میںKosmo online نامی ویب سائٹ کے مطابق فادی کو دارالحکومت کولالمپور کے قبرستان Batu Muda میں دفن کرنے کی تیاریاں کی جا رہی تھیں تاہم فادی کے والد نے فلسطینی سفارت خانے کے ذریعے رابطہ کر کے مطالبہ کیا کہ ان کے بیٹے کی تدفین غزہ پٹی کے گاؤں جبالیا میں کی جائے جہاں فادی نے آج سے 35 برس پہلے آنکھ کھولی تھی۔ فادی کی میت آئندہ ہفتے غزہ پٹی پہنچے گی۔