.

اسامہ کا ’محافظ‘جرمنی میں اہل خانہ کے ہمراہ سرکاری خرچے پر موجیں مار رہا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

القاعدہ کے سابق سربراہ اسامہ بن لادن کے تیونسی محافظ سے متعلق انکشاف ہوا ہے کہ وہ 1997ء سے جرمنی میں مقیم ہے اور اسے سوشل ویلفیئر کی مد میں ماہانہ 1168 یورو دیے جاتے ہیں۔

مذکورہ شخص کو سمیع اے کے نام سے شناخت کیا گیا ہے تاہم جرمن میڈیا نے سیکورٹی خدشات کے پیش نظر اس شخص کا مکمل نام ظاہر نہیں کیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق سمیع اے نے 2000ء میں کئی ماہ تک اسامہ بن لادن کے محافظ کے طور پر افغانستان میں کام کیا۔

2006ء میں سمیع اے کے القاعدہ کے ساتھ روابط کی تفتیش کی تاہم ان پر کوئی فردِ جرم عائد نہیں کی گئی۔ سمیع اے اپنی جرمن اہلیہ اور چار بچوں کے ساتھ مغربی جرمنی کے شہر بوچم میں رہتا ہے۔

بلد نیوز کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اس نے جہادیوں سے کسی قسم کے تعلق کی تردید کی ہے اور فوری طور پر اسے ملک بدر کر کے تیونس بھیجنے کے امکانات کو رد کر دیا گیا ہے کیونکہ وہاں اس پر تشدد کیے جانے کے خدشات موجود ہیں۔

سمیع اے نے 1999ء میں جرمنی میں رہائش کا عبوری اجازت نامہ حاصل کیا اور اس نے ٹکنالوجی کے حوالے سے متعدد کورسز کیے۔ 2007ء میں اس کی پناہ کی درخواست اس لیے مسترد کر دی گئی کیونکہ حکام نے اسے سکیورٹی کے حوالے سے خطرہ قرار دیا تھا۔ پناہ کی درخواست مسترد ہونے کے بعد اب اسے ہر روز مقامی تھانے میں حاضری لگانی پڑتی ہے۔