.

کویت میں متعیّن فلپائنی سفیر کو ایک ہفتے میں ملک چھوڑنے کی ہدایت

خلیجی ریاست نے منیلا میں متعیّن کویتی سفیر کو بھی واپس طلب کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کویت اور فلپائن کے درمیان جاری سفارتی بحران شدت اختیار کر گیا ہے اور کویت نے فلپائنی سفیر کو ایک ہفتے میں ملک چھوڑنے کی ہدایت کردی ہے اور منیلا میں متعیّن اپنے سفیر کو واپس بلا لیا ہے۔

فلپائن نے گذشتہ روز ہی کویت سے گھریلو ملازماؤں کو نکالنے کے نام پر اپنے سفارت خانے کے عملہ کی کارروائیوں پر خلیجی ریاست سے باضابطہ طور پر معذرت کی تھی۔کویت نے گھروں میں کام کرنے والی فلپائنی ملازماؤں کو ’’ریسکیو‘‘ کے نام پر از خود بلا اطلاع نکالنے پر احتجاج کیا تھا۔

کویتی وزارت خارجہ نے فلپائنی سفیر کو طلب کرکے ان سے باقاعدہ احتجاج کیا تھا اور گذشتہ ہفتے کے روز ایسے کارروائیوں میں ملوث فلپائنی سفارتی عملہ کے دو ارکان کو گرفتار کر لیا تھا۔فلپائن کے وزیر برائے امور خارجہ ایلن پیٹر کیٹانو نے منگل کے روز یہ دعویٰ کیا تھا کہ کویت نے فلپائن کی وضاحت قبول کر لی ہے۔

انھوں نے ایک ہنگامی نیوز کانفرنس میں کہا تھا کہ ’’ ہم اپنے کویتی ہم منصب کو ایک مراسلہ بھیج رہے ہیں اور ہم کویت میں پیش آنے والے ایسے بعض واقعات پر معذرت خواہ ہیں ، جن کو کویت اپنی خود مختاری کی خلاف ورزی خیال کرتا ہے۔کویتی حکام سے ایسے واقعات کے اعادے کو روکنے کے لیے اتفاق رائے ہوگیا ہے اور دونوں ممالک فلپائنی تارکین وطن کے تحفظ کے لیے ایک معاہدے پر بھی کام کررہے ہیں ‘‘۔

واضح رہے کہ فلپائنی صدر روڈریگو نے جنوری میں اپنے شہریوں کو کویت میں بھیجنے پر پابندی عاید کردی تھی اور انھوں نے یہ فیصلہ کویت میں فلپائنی تارکین وطن سے مبینہ ناروا سلوک کی اطلاعات منظرعام پر آنے کے بعد کیا تھا۔