ایران نے شام میں 80 ہزار شیعہ جنگجو بھرتی کر لیے : اسرائیلی سفیر کا دعویٰ

دمشق سے پانچ میل دور اڈے پر شیعہ جنگجوؤں کو دہشت گردی کی کارروائیوں کی تربیت دی جارہی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اقوام متحدہ میں متعیّن اسرائیلی سفیر نے دعویٰ کیا ہے کہ ایران نے شام میں کم سے کم 80 ہزار شیعہ جنگجو بھرتی کر لیے ہیں اور وہ انھیں دمشق سے صرف پانچ میل دور واقع ایک فوجی اڈے پر جنگی تربیت دے رہا ہے۔

اسرائیلی سفیر ڈینی ڈینن نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں جمعرات کو بیان دیتے ہوئے یہ دعویٰ کیا ہے۔انھوں نے اس وقت ہاتھ میں ایک نقشہ پکڑ رکھا تھا اور انھوں نے نشان دہی کرتے ہوئے کہا کہ ’’ آپ یہاں دیکھ سکتے ہیں،یہ شام میں ایران کا بھرتی مرکز ہے۔جنگ زدہ ملک میں ایران کے کنٹرول میں 80 ہزار جنگجو ہیں ۔وہ دمشق سے صرف پانچ میل کی دوری پر واقع ایک فوجی اڈے پر موجود ہیں جہاں انھیں شام اور خطے بھر میں دہشت گردی کی کارروائیوں کی تربیت دی جارہی ہے‘‘ ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں