ایران کے جوہری معاہدے سے گلو خلاصی ممکن نہیں: ماکروں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فرانس کے صدر عمانویل ماکروں نے امریکی کانگریس سےخطاب میں واضح کیا ہے کہ عالمی طاقتوں اور ایران کے درمیان تہران کے متنازع جوہری پروگرام پر طے پائے معاہدے کو ختم نہیں کیا جاسکتا۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ ایران کو جوہری ہتھیاروں کےحصول سے روکنا ناگزیر ہے۔

فرانسیسی صدر نے کہا کہ ایران کی پالیسی ہمیں مشرق وسطیٰ میں جنگ کی طرف نہ لے جائے۔

انہوں نے خبردار کیا کہ اتحادی ممالک کے درمیان تجارتی جنگ خطرناک ہے۔ انہوں نے امریکی سینٹ اور ایوان نمائندگان کی انوینٹری تکثریت کے اعادہ پر بھی زور دیا۔

صدر ماکروں نے کہا کہ اتحادی ملکوں کے درمیان تجارتی بنیادوں پر کشمکش مناسب نہیں۔ ان کا اشارہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ان دھمکیوں کی طرف تھا جن میں وہ بعض ممالک کے ساتھ تجارتی جنگ کا اشارہ دے چکے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پیرس میں ہونے والے عالمی ماحولیاتی معاہدے کا کوئی متبادل نہیں۔

فرانسیسی صدر کے خطاب کے دوران کانگریس کےارکان تین منٹ تک تالیاں بجا کر ان کا خیر مقدم کرتے رہے۔ صدر عمانویل نے کہا کہ فرانس اور امریکا کے تعلقات کی تاریخ بہت گہری ہے اور ہمارے رابطے کبھی بھی متاثر نہیں ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ عرصے کے دوران امریکا اور فرانس دونوں دہشت گردی سے متاثر ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں