بھارتی سکیورٹی فورسز کی فائرنگ سے تین کشمیری نوجوان شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بھارت کے زیر انتظام ریاست مقبوضہ جموں وکشمیر میں سکیورٹی فورسز کی فائرنگ سے تین کشمیری نوجوان شہید اور چودہ زخمی ہوگئے ہیں ۔

اطلاعات کے مطابق دارالحکومت سری نگر میں سکیورٹی فورسز نے سوموار کو حکومت مخالف مظاہرین پر فائرنگ کردی ہے جس کے نتیجے میں ایک کشمیری نوجوان شہید اور چودہ زخمی ہوگئے ہیں ۔ مظاہرین آج صبح دو اور کشمیری نوجوانوں کی بھارتی فوجیوں کی ایک کارروائی میں شہادت کے خلاف احتجاج کررہے تھے۔

بھارتی پولیس کا کہنا ہے کہ فوجیوں کو سری نگر کے جنوب میں واقع گاؤں دربگام میں ان نوجوانوں کی موجودگی کی اطلاع ملی تھی جس کے بعد انھوں نے اس گاؤں کا محاصرہ کر لیا تھا۔

پولیس کی بیان کردہ کہانی کے بعد جب فوجی ان کے مکان کے نزدیک پہنچے تو انھوں نے فائرنگ شروع کردی جس کے بعد کئی گھنٹے تک ان کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوتا رہا ہے ۔اس جھڑپ میں دو کشمیری نوجوان مارے گئے اور بھارتی فوج کے ایک افسر سمیت دو فوجی زخمی ہوگئے۔

بھارتی فوج کی اس زمینی کارروائی کے دوران میں ایک ہیلی کاپٹر بھی فضا میں گردش کرتا رہا ہے۔مقبوضہ کشمیر کی حریت پسند قیادت نے تین نوجوانوں کی ہلاکت کی مذمت کی ہے اور منگل کو ریاست میں عام ہڑتال کی اپیل کی ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ سال بھارتی فورسز کے ساتھ اس طرح کی جھڑپوں میں انتیس کشمیری شہری شہید اور سیکڑوں زخمی ہوگئے تھے۔ریاست جموں وکشمیر میں گذشتہ تین عشروں سے بھارت کی حکمرانی کے خلاف جاری اس تحریک کے دوران میں 70 ہزار سے زیادہ کشمیری مارے جاچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں