پاکستانی نژاد مسلم ساجد جاوید برطانیہ کے وزیر داخلہ مقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ میں حکومتی پریذیڈنسی نے پیر کے روز پاکستانی نژاد مسلمان ساجد جاوید کو ملک کا وزیر داخلہ مقرر کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ان کا تقرر 54 سالہ خاتون وزیر ایمبر رُڈ کی جگہ عمل میں آیا ہے جنہوں نے جزائر غرب الہند سے آنے والے مہاجرین کے ساتھ اپنے ادارے کے طریقہ کار سے متعلق اسکینڈل کے پس منظر میں اتوار کے روز استعفا دے دیا تھا۔

ساجد جاوید (48 سالہ) 5 دسمبر 1969ء کو برطانیہ کی کاؤنٹی یارکشائر میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد 50 برس سے بھی زیادہ عرصہ پہلے پاکستان سے ہجرت کر کے برطانیہ آ گئے تھے۔ ساجد برطانیہ کی Conservative and Unionist Party سے تعلق رکھنے والے سیاست دان ہیں۔ انہوں نے برطانیہ کی University of Exeter سے معیشت اور سیاست کی تعلیم حاصل کی۔ گریجویشن کے بعد انہوں نے نیویارک میں "چیز مین ہیٹن" بینک میں کام کیا۔

سال 2000ء میں ساجد نے "ڈوئچے بینک" میں بطور مینجر شمولیت اختیار کی۔ بعد ازاں وہ بینک کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے سربراہ بن گئے اور بینک کی انتظامیہ میں کئی عہدے سنبھالے۔ سال 2009ء میں انہوں نے بینکنگ سیکٹر کو خیرباد کہا اور سیاست کے میدان میں آ گئے۔

سال 2010ء میں ساجد جاوید کنزرویٹو پارٹی سے تعلق رکھنے والے پہلے مسلمان رکن پارلیمنٹ بن گئے۔ اکتوبر 2011ء میں انہیں برطانوی وزیر خزانہ کا خصوصی سکریٹری مقرر کیا گیا۔ انہوں نے وزارت خزانہ میں اقتصادی امور کے سکریٹری کے طور پر بھی کام کیا۔ بعد ازاں 7 اکتوبر 2013ء کو وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے ساجد کو وزارت خزانہ میں وزیر مملکت کے عہدے پر مقرر کیا۔

برطانوی وزیراعظم کے سرکاری ترجمان کے مطابق ٹریزا مے نے اتوار کی شب وزیر داخلہ ایمبر رُد کا استعفا منظور کر لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں