.

ایران کی جوہری سرگرمیوں سے متعلق اسرائیلی الزامات کا جائزہ لیں گے: جرمنی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی کی حکومت نے کہا ہے کہ وہ ایران کی خفیہ جوہری سرگرمیوں کے حوالے سے اسرائیل کے الزامات کا سنجیدگی سے جائزہ لے گی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جرمن حکومت کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ جرمنی اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کی طرف سے ایران کی خفیہ جوہری سرگرمیوں کے حوالے سے عاید کردہ الزامات اور اس حوالے سے دی جانے والی معلومات کا جائزہ لے گا۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ ایران کے ساتھ جاری جوہری معاہدہ برقرار رہنا چاہیے اور عالمی معائنہ کاروں کو ایران کی تمام جوہرہ تنصیبات کے معائنہ کی آزادانہ اجازت ملنی چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ عالمی برادری ایران کی جوہری سرگرمیوں کو شبے کی نگاہ سے دیکھ رہی ہے۔ ایران کو عالمی طاقتوں کے ساتھ طے پائے معاہدے کو اس کی روح کے مطابق نافذ کرنا ہوگا۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے دعویٰ کیا تھا کہ ایران خفیہ طورپر جوہری ہتھیاروں کی تیاری پر کام کررہا ہے۔

نیتن یاھو کا کہنا تھا کہ انہیں ایسی ہزاروں دستاویزات ملی ہیں جن سے معلوم ہوتا ہے کہ ایران نے معاہدے کے بعد خفیہ طورپر جوہری ہتھیاروں کی تیاری پر کام کی کوشش کی تھی۔