لبنان : 9 برس بعد آج پارلیمانی انتخابات کا انعقاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان میں آج اتوار کے روز 9 برس بعد نئی پارلیمنٹ کے انتخاب کے لیے ووٹ ڈالے جا رہے ہیں۔

مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے پولنگ مراکز کے دروازے کھول دیے گئے پولنگ کا سلسلہ شام سات بجے تک جاری رہے گا۔ لبنان میں رجسٹرڈ ووٹرز کی مجموعی تعداد 37 لاکھ ہے۔

پارلیمانی انتخابات کے موقع پر سکیورٹی کے سخت اقدامات کیے گئے ہیں اور 20 ہزار سے زیادہ سکیورٹی اور فوجی اہل کار مکمل تیار حالت میں ہیں۔ وزارت داخلہ کے ایک بیان کے مطابق انتخابات کے موقع پر پورے ملک میں ٹرکوں، موٹر سائیکلوں اور گاڑیوں کی نقل و حرکت کو محدود کر دیا گیا ہے۔

دوسری جانب یورپی یونین نے لبنان کی دعوت پر اپنے 100 سے زیادہ مبصرین کو بھیجا ہے جو لبنانی انتخابات کا جائزہ لیں گے۔

لبنانی پارلیمنٹ کی 128 نشستوں کے لیے 15 حلقوں میں 597 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہے جن میں 86 خواتین شامل ہیں۔

لبنان میں آخری مرتبہ پارلیمانی انتخابات 2009ء میں ہوئے تھے۔ اُس وقت پارلیمنٹ کی مدت کو چار برس بعد مکمل ہو جانا تھا تاہم خطّے میں عدم استحکام کے باعث اس مدت میں دو مرتبہ توسیع کی گئی اور انتخابی قوانین میں ترمیم کے لیے راہ ہموار کی گئی۔

سابقہ انتخابی قانون میں تبدیلی کر کے اب مذہبی فرقے کے کوٹے کا نظام نافذ کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں لبنان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ تارکین وطن کو ووٹ کا حق دیا گیا ہے۔

دوسری جانب بعلبک الہرمل کے علاقے میں شیعہ نشست کے لیے لبنانی فورسز پارٹی اور المستقبل پارٹی کے حمایت یافتہ امیدوار محمد حمیہ نے انتخابات سے ایک روز قبل دست بردار ہونے کا اعلان کر دیا۔ جمعے کے روز جاری بیان میں محمد حمیہ نے واضح کیا کہ انہوں نے یہ فیصلہ اپنے اہل خانہ کے تحفظ کے واسطے کیا اس لیے کہ علاقے میں کنٹرول کی حامل جماعت کی جانب سے نقصان پہنچنے کا اندیشہ تھا۔ یہ جماعت لبنانی ملیشیا حزب اللہ کے سوا کوئی اور نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں