قاہرہ میں اسرائیلی سفارت خانے کے زیر اہتمام صہیونی ریاست کے قیام کی سالگرہ تقریبات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر کے دارالحکومت قاہر ہ میں اسرائیلی سفارت خانے نے دسمبر 2011ء میں مظاہرین کے دھاوے کے بعد پہلی مرتبہ صہیونی ریاست کے قیام کے ستر سال پورنے ہونے پر سالگرہ کی تقریبات منائی ہیں۔

دریائے نیل کے کنارے واقع رٹز کارلٹن ہوٹل میں اسرائیلی سفارت خانے کی تقریب میں مصری حکام ، سفارت کاروں اور کاروباری شخصیات نے شرکت کی ہے۔اس کے بعد سے انھیں سوشل میڈیا پر لوگوں کے شدید غیظ وغضب کا سامنا ہے اور وہ انھیں اپنے تبصروں میں کڑی نکتہ چینی کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

رٹز کارلٹن ہوٹل میدان التحریر کے ایک جانب واقع ہے ۔یہیں پر سابق مطلق العنان مصری صدر حسنی مبارک کی حکومت کے خلاف جنوری اور فروری 2011ء میں عوامی احتجاجی مظاہرے جاری رہے تھے اور بالآخر انھیں اقتدار سے ہاتھ دھونا پڑے تھے۔

اسرائیل ایسے وقت میں اپنےقیام کی سالگرہ تقریبات منا رہا ہے جب امریکا 14 مئی کو اپنا سفارت خانہ تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کی تیاری کررہا ہے اور فلسطینی اسی روز یوم نکبہ منائیں گے۔

دریں اثناء اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے مصر اور اسرائیل کے درمیان تعلقات کو’’ گرم جوش‘‘ قرار دیا ہے۔ان دونوں ممالک کے درمیان جزیرہ نما سیناء میں دہشت گردی کے خلاف جنگ اور معاشی تعلقات کے فروغ سمیت بہت سے امور میں اتفاق رائے پایا جاتا ہے۔

مصری وزیراعظم علی عبدالعال نے کہا ہے کہ پارلیمان کے ارکان امریکی سفارت خانے کی مقبوضہ بیت المقدس میں منتقلی کے سلسلے میں منعقد ہونے والی تقریبات میں شریک نہیں ہوں گے کیونکہ مصر مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم نہیں کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں