ملائیشیا: مہاتیر محمد کی تاریخی فتح، اپوزیشن اتحاد نے الیکشن جیت لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ملائیشیا کی حزب اختلاف کے اتحاد نے سابق وزیر اعظم مہاتیر محمد کی زیر صدارت پارلیمانی انتخابات میں تاریخی کامیابی حاصل کرتے ہوئے حکومتی اتحاد کے 60 سالہ اقتدار کو ختم کردیا ہے

ملائیشیا کے الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ مہاتیر محمد کے حزب مخالف اتحاد نے 115 نشستوں پر کامیابی حاصل کی ہے جبکہ اسے حکومت بنانے کے لیے 112 نشستوں کی ضرورت تھی۔

92 سالہ مہاتیر محمد نے برسرِاقتدار باریسن نیشنل اتحاد کو شکست دی ہے جو کہ گذشتہ 60 سالوں سے اقتدار میں ہے۔

اگرچہ مہاتیر محمد نے سیاست سے ریٹائرمنٹ لے لی تھی تاہم انھوں نے ان انتخابات میں سیاست میں واپس آ کر اپنے مخالف نحیب رزاق کو شکست دی۔ نجیب رزاق پر بدعنوانی اور دوست پروری کا الزام عائد کیا جاتا ہے۔

نجیب رزاق کی جانب سے شکست تسلیم

ملائیشیا کے سابق وزیر اعظم نجیب رزاق نے ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے اپنی شکست کو تسلیم کر لیا۔ ان کا کہنا تھا "میں عوام کا فیصلہ تسلیم کرتا ہوں۔" ان کا مزید کہنا تھا کہ پارلیمنٹ میں کسی ایک پارٹی نے اکثریت حاصل نہیں کی اور ملائیشیا کے آئین کے مطابق اب بادشاہ کے پاس وزیر اعظم نامزد کرنے کا اختیار ہے۔"

مہاتیر محمد کے اتحادیوں نے 121 سیٹیں جیت لی ہیں جبکہ ملائیشیا کے پارلیمان میں 222 سیٹیں موجود ہیں اور برسر اقتدار آںے کے لئے اکثریت ملنا ضروری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں