ایران: سپرنٹنڈنٹ نے حجاب اتارنے والی طالبہ کے بال زبردستی کاٹ دیے

اسکول میں واقعے کے بعد لڑکی پر دمے کا حملہ ، حالت خراب ہونے پر اسپتال داخل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے جنوب مغربی صوبہ آبادان میں ایک ایلیمنٹری اسکول میں سپرنٹنڈنٹ نے ایک طالبہ کے حجاب اتارنے پر سر کے بال کاٹ دیے ہیں ۔

ایران کی قومی مزاحمتی کونسل کی خواتین کمیٹی کے مطابق یہ واقعہ 6 مئی کو آبادان کے ضلع گلستان شہر میں پیش آیا تھا۔اس ایلیمنٹری اسکول میں تمام طالبات زیر تعلیم ہیں لیکن انھیں معلمات کے علاوہ اساتذہ بھی پڑھاتے ہیں ۔

کونسل کے مطابق اسکول اسپرنٹنڈنٹ نے حجاب اتارنے پر اس لڑکی کے قینچی سے بال کاٹ دیے تھے اور اس کا یہ جواز پیش کیا تھا کہ سرپوش سے بال باہر نظر آنے پر ایک ماسٹر نے اعتراض کیا تھا۔متاثرہ طالبہ کا نام نرگس بتایا گیا ہے ۔ واقعے کے بعد اس پر دمے کا حملہ ہوا تھااور اس کو اسپتال لے جانا پڑا تھا۔

دسمبر 2017ء میں مغربی صوبے آذر بائیجان کے دارالحکومت اُرمیہ کے نزدیک واقع ایک گاؤں اسلام آباد کے ایک اسکول میں بھی اسی طرح کا واقعہ پیش آیا تھا اور پرنسپل اور ماسٹر نے سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی معیّت میں اسکول کے احاطے میں ان تمام لڑکیوں کے بال کاٹ دیے تھے ،جن کے بال اسکارف سے باہر نظر آئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں