برطانیہ کا غزہ میں تشد د کے واقعات کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانیہ نے اسرائیل اور غزہ کے درمیان سرحد پر تشدد کے واقعات کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔اسرائیلی فوج کی سوموار کو تشدد کی کارروائیوں میں 60 سے زیادہ فلسطینی شہید اور ڈھائی ہزار کے لگ بھگ زخمی ہوگئے ہیں۔

برطانوی دفتر خارجہ میں مشرق اوسط امور کے وزیر ایلسٹیئر برٹ نے منگل کے روز دارالعوام میں بیان دیتے ہوئے کہا’’ برطانیہ (غزہ میں ) جو کچھ رونما ہوا ہے،اس کی آزادانہ تحقیقات کی حمایت کرتا ہے‘‘۔

انھوں نے اسرائیل پر زور دیا ہے کہ وہ براہ راست گولیاں چلانے میں زیادہ سے زیادہ ضبط وتحمل کا مظاہرہ کرے ۔نیز اس امر کی تحقیقات ہونی چاہیے کہ اتنی زیادہ تعداد میں گولیاں کیوں چلائی گئی ہیں؟

تاہم انھوں نے اس بات پر بھی افسوس کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ انتہا پسند عناصر ان مظاہروں سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کررہے ہیں۔ان کے بہ قول برطانوی حکومت ان وجوہ کو بہ خوبی سمجھتی ہے کہ اسرائیل کیوں اپنی سرحد اور سرحدی باڑھ کا تحفظ چاہتا ہے۔

غزہ میں فلسطینی وزارتِ صحت نے بتایا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس میں امریکی سفارت خانے کے افتتاح کے خلاف احتجاج کے دوران شہید ہونے والے فلسطینیوں میں زیادہ تر اسرائیلی فوجیوں کی براہ راست گولیوں کا نشانہ بنے ہیں۔2014ء کی غزہ، ا سرائیل جنگ کے بعد یہ سب سے خونیں دن تھا اور اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے کم سے کم 2400 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

مسٹر برٹ نے برطانیہ کے اس موقف کا اعادہ کیا کہ وہ تنازع کا دوریاستی حل چاہتا ہے اور وہ امریکا کے سفارت خانے کو تل ابیب سے مقبوضہ ا لمقدس منتقل کرنے کے فیصلے سے متفق نہیں۔انھوں نے پارلیمان کو یہ بھی بتایا کہ حکومت کے پاس ایسی کوئی اطلاع نہیں کہ برطانیہ کے مہیا کردہ آلات کو اہلِ غزہ کے خلاف استعمال کیا گیا ہے۔

سعودی عرب سمیت مختلف ممالک اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں نے اسرائیلی فوج کی تشدد آمیز کارروائیوں میں فلسطینیوں کے اتنے زیادہ جانی نقصان کی شدید مذمت کی ہے لیکن اسرائیل کے پشتی بان امریکا نے نہتے فلسطینیوں کے خلاف فوجی طاقت کے اس وحشیانہ استعمال کی بالکل بھی مذمت نہیں کی بلکہ اس نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں غزہ میں تشدد کے واقعات کی آزادانہ تحقیقات کے لیے بیان بھی منظور نہیں ہونے دیا اور اس کو بلاک کردیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں