عالمی فوجداری عدالت کا فلسطینیوں کے قتل عام کی آزادانہ تحقیقات کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عالمی فوجداری عدالت (آئی سی سی) نے فلسطین کے علاقے غزہ میں ’یوم نکبہ‘ کے موقع پر اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملوں میں نہتے شہریوں کے قتل عام کی آزادانہ تحقیقات کی یقین دہانی کرائی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ہیگ میں قائم عدالت کی پراسیکیوٹر جنرل فاتو بنسودا نے ایک بیان میں کہا کہ وہ غزہ میں جاری بے امنی پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ ہمارے اہلکار غزہ میں فیلڈ کی صورت حال کا جائزہ لے رہے ہیں۔ ہم دیکھ رہے ہیں کہ عالمی فوجداری عدالت کے دائرہ اختیار میں آنے والے کسی بھی جرم کی تحقیقات کے لیے کیا لائحہ عمل اختیار کیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ تشدد کاسلسلہ بند ہونا چاہیے، فریقین کو تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے خون خرابے سے بچنے کی پالیسی اختیار کرنا ہو گی۔ مسز بنسودا کا کہنا تھا کہ اسرائیلی فوج فلسطینی مظاہرین کے خلاف طاقت کا اندھا دھند استعمال کررہی ہے جس کا کوئی جواز نہیں۔

خیال رہے کہ سوموار کے روز غزہ کی مشرقی سرحد پر اپنے حق واپسی کے لیے احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر اسرائیلی فوج نے اندھا دھند شیلنگ اور فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں 61 فلسطینی شہری شہید اور کم سے کم تین ہزار زخمی ہو گئے تھے۔ غزہ میں سنہ 2014ء کی جنگ کے بعد ایک ہی روز میں شہریوں کے قتل عام کا یہ سب سے بڑا واقعہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں