.

بحرین نے امریکا کے ایران سے مطالبات کی تائید کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحرین نے ایران کے بارے میں امریکا کی حکمت عملی کی مکمل حمایت کا اظہار کیا ہے۔ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے چندے قبل خبردار کیا ہے کہ اگر ایران کی قیادت اپنی خارجہ اور داخلہ پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں لاتی تو پھر تاریخ میں اس ملک کے خلاف سخت ترین پابندیاں عاید کردی جائیں گی۔

بحرینی وزارت خارجہ نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ پومپیو کی حکمتِ عملی خطے کی سلامتی اور استحکام کو خطرے سے دوچار کرنے سے متعلق ایرانی پالیسیوں سے نمٹنے کے عزم کی مظہر ہے۔اس کا مقصد جوہری سمجھوتے کی کمیوں کا ازالہ کرنا ہے‘‘۔ بیان میں امریکا کی علاقائی اور بین الاقوامی امن اور سلامتی کو مضبوط بنانے اور انارکی ،کشیدگی کو روکنے اور تنازعات کے حل کے لیے انتھک کوششوں کو سراہا گیا ۔

’’وزارت امور خارجہ اس عزم کا اعادہ کرتی ہے کہ مملکت بحرین ایرانی خطرے کے مقابلے اور ایران کی تشدد اور دہشت گردی کو برآمد کرنے کے لیے کوششوں سے نمٹنے کے لیے امریکا کے ساتھ کھڑی ہے۔وہ اس بات پر زور دیتی ہے کہ ایران خطے میں امن کے قیام اور تنازعات کے حل کے لیے کوششوں کا مثبت جواب دے۔ وہ اپنے جوہری ہتھیاروں اور وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کا خاتمہ کرے۔دہشت گرد ملیشیاؤں کی مدد و حمایت فور ی طور پر روک دے ۔ وہ بین الاقوامی قوانین اور اقدار کی پاسداری کرتے ہوئے خطے کی ریاستوں کے داخلی امور میں مداخلت نہ کرے‘‘۔بیان میں مزید کہا گیا ہے۔

بحرینی وزارت خارجہ نے یہ بیان امریکی وزیر خارجہ کے ایران سے بارہ مطالبات کے بعد جاری کیا ہے۔مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ ایران کو اقتصادی پابندیوں میں صرف اسی صورت میں کوئی رعایت دی جائے گی جب واشنگٹن کو تہران کی پالیسیوں میں کوئی جوہری اور ٹھوس تبدیلی نظر آئے گی۔