.

سعودی لوک ورثہ پر مبنی پہلی اینیی میٹڈ فلم نے جاپانی ٹی وی پر دھوم مچا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی تیار کردہ پہلی اینیی میٹڈ فلم کی ان دنوں جاپان کے مشہور ٹوکیو ٹی وی پر کامیاب نمائش جاری ہے۔ “لکڑ ہارے کا خزانہ” کے عنوان سے بننے والی اینیی میٹڈ فلم سعودی عرب کی مانگا پروڈکشن نامی کمپنی نے تیار کی ہے۔

مانگا کمپنی، سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی “مسک” فاونڈیشن سے وابستہ ہے اور” لکڑ ہارے کا خزانہ” نامی متحرک کارٹون فلم کمپنی نےجاپان کی ٹوئے اینیی میشن کمپنی کے اشتراک سے بنائی ہے۔

جاپان اور سعودی عرب کے تعاون سے بننے والی پہلی متحرک کارٹون پیش کش کا دورانیہ بائیس منٹ پر محیط ہے اور گذشتہ روز اس ٹوکیو ٹی وی پر نمائش کے لئے پیش کیا گیا۔

“لکڑ ہارے کا خزانہ” جزیرہ نما عرب کے لوک ورثہ سے متعلق ایک کہانی ہے۔

مانگا پروڈکشن کے چیف ایگزیکٹو آفیسر عصام بخاری نے بتایا کہ ان کی کمپنی عالمی پروڈکشن ہاوسز کے ساتھ مل کر نت نئی پیش کشوں کے ذریعے دنیا اور نئی نسل کو سعودی عرب کی ثقافت سے روشناس کرانے کے لئے کوشاں ہے۔

مانگاپروڈکشن کی کوشش ہے کہ وہ مختلف بین الاقوامی گروپس اور معاشروں کو مدنظر رکھتے ہوئے مثبت پیغام کی حامل ویڈیو گیمز اور تخلیفی مواد تیار کرے۔

انھوں نے بتایا کہ ہماری کمپنی پیشہ وارانہ معیار کی حامل ایسی اچھوتی اینیی میشن اور ویڈیو گیمز بنانا چاہتی ہے جن کے ذریعے بین الاقوامی سطح پر سعودی افکار اور نظریات کی ترویج ممکن ہو سکے۔