.

علی خامنہ ای کے یورپی ممالک سے جوہری سمجھوتا برقرار رکھنےکے لیےسات مطالبات

ہم تین ممالک فرانس ، جرمنی اور برطانیہ کے ساتھ کسی لڑائی کا آغاز نہیں چاہتے لیکن ہمیں ان پر اعتماد بھی نہیں: سپریم لیڈر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے عالمی طاقتوں سے طے شدہ جوہری سمجھوتے کو برقرار رکھنے کے لیے سات شرائط پیش کردی ہیں ۔انھوں نے ایک شرط یہ عاید کی ہے کہ امریکا کے جوہری سمجھوتے سے انخلا کے بعد یورپی بنک ایران سے تیل کی تجارت کو تحفظ مہیا کریں۔

آیت اللہ علی خامنہ ای کی سرکاری ویب سائٹ پر بدھ کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق انھوں نے یورپی طاقتوں سے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ ’’وہ امریکی دباؤ کے مقابلے میں ایران کی تیل کی فروخت ( برآمدات) کو تحفظ مہیا کریں ،ایران سے خام تیل کی خریداری کا سلسلہ جاری رکھیں ‘‘۔

انھوں نے ایک کڑی شرط یہ عاید کی ہے کہ یورپی ممالک ان سے یہ وعدہ کریں کہ وہ ایران کے بیلسٹک میزائل پروگرام اور اس کی مشرقِ اوسط کے خطے میں علاقائی سرگرمیوں کے بارے میں کوئی نئے مذاکرات نہیں کریں گے۔

خامنہ ای کا کہنا ہے:’’ یورپی بنکوں کو اسلامی جمہوریہ کے ساتھ تجارت کو تحفظ مہیا کرنا چاہیے۔ ہم ان تین ممالک ( فرانس ، جرمنی اور برطانیہ ) کے ساتھ کسی لڑائی کا آغاز نہیں چاہتے لیکن ہمیں ان پر اعتماد بھی نہیں ہے‘‘۔

انھوں نےمزید کہا:’’ یورپ کو ایران کے تیل کی فروخت کی مکمل ضمانت دینی چاہیے۔اگر امریکی ہمارے تیل کی فروخت کو نقصا ن پہنچاتے ہیں تو پھر یورپیوں کو آگے آنا چاہیے اور ایرانی تیل خرید کرنا چاہیے‘‘۔